Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

جھوٹا وعدہ نہیں کرسکتا کہ چٹکی بجا کر وبا ختم کردوں گا : جوبائیڈن

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سیاسی حریف اور صدارتی امیدوار جوبائیڈن نے کہا ہے کہ وہ اپنی انتخابی مہم میں ہرگز جھوٹا وعدہ نہیں کرسکتے کہ برسر اقتدار آگئے تو چٹکی بجا کر کورونا وائرس کی وبا ختم کردیں گے۔

واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ ہفتے کے انتخابی مہم کے دوروں کے دوران وعدہ کیا تھا کہ وہ کورونا وبا کو ختم کردیں گے۔

اس ضمن میں خیال رہے کہ امریکا میں لاکھوں افراد وائرس سے مرچکے ہیں جبکہ وبا کے اثرات کو محدود کرنے سے متعلق ناقص اقدامات پر ٹرمپ کو شدید تنقید کا سامنا رہا ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے ’رائٹرز‘ کے مطابق ڈیموکریٹک صدارتی اُمیدوار جوبائیڈن نے یہ بھی کہا کہ سپریم کورٹ کی قدامت پسند اکثریت 6-3 تک بڑھ گئی ہے جس کے بعد جسٹس امی کونی بیریٹ کورونا وبائی مرض کے دوران لاکھوں افراد کو حاصل انشورنس کوریج سے محروم کرسکتے ہیں جو اوباما انتظامیہ نے متعارف کرائیں تھیں۔

انہوں نے کورونا وائرس سے متعلق ٹرمپ کی حکمت عملی کو متاثرین کی توہین قرار دیا۔

جوبائیڈن نے ولمنگٹن میں ایک تقریر کے دوران کہا کہ اگر میں جیت بھی گیا تو اس وبائی بیماری کو ختم کرنے کے لیے بہت زیادہ محنت کرنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’لیکن میں وعدہ کرتا ہوں کہ پہلے روز سے ہی اس مسئلے کے حل پر کام شروع کردیں گے‘۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ ہفتے ایریزونا میں منعقد ریلی کے دوران امریکا میں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز کی تعداد کو نظر انداز کرتے ہوئے وعدہ کیا تھا کہ موسم گرما کی سہ ماہی میں معاشی نمو کے اعدادوشمار مثبت ہوں گے۔

انہوں نے کہا تھا کہ یہ صدارتی انتخاب ٹرمپ کی ’سپر ریکوری‘ اور جوبائیڈن ’ڈپریشن‘ کے درمیان انتخاب ہے۔

واضح رہے کہ امریکا میں کورونا وائرس سے اب تک 91 لاکھ سے زائد افراد متاثر جبکہ 2 لاکھ 33 ہزار افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

خود امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور ان کی اہلیہ میلانیا بھی کورونا وائرس سے متاثر ہونے والوں میں شامل ہیں جبکہ وہ اپنی انتخابی مہم کے دوران امریکی عوام کو قائل کرنے کے لیے کوشاں رہے کہ کورونا وائرس کی بدترین وبا اب گزر چکی ہے۔

ٹرمپ کو کئی مرتبہ خبردار کیا گیا کہ وہ بھی کورونا وائرس کا شکار ہو سکتے ہیں لیکن انہوں نے اس بات کو کبھی سنجیدگی سے نہیں لیا بلکہ کئی مرتبہ اس کا مذاق بھی اڑا چکے تھے۔

جب ابتدا میں وائرس امریکا پہنچا تو ٹرمپ نے کہا تھا کہ یہ جس طرح آیا ہے ویسے ہی غائب ہو جائے گا جبکہ وہ کئی مرتبہ عوامی مقامات پر ماسک نہ پہننے پر بھی تنقید کا نشانہ بن چکے ہیں۔

ملک میں دوبارہ سے بڑھتے ہوئے کیسز کے باوجود ٹرمپ نے اپنے گورنرز کو کہا تھا کہ وہ بڑھتی ہوئی اموات پر توجہ دینے کے بجائے دوبارہ کاروبار کھول کر معیشت کی بحالی کے لیے کوشش کریں۔

وائرس کی ابتدا سے ہی ماہرین وائٹ ہاؤس میں بداحتیاط رویے پر تحفظات کا اظہار کرتے رہے ہیں لیکن اس معاملے پر بھی ٹرمپ نے ان کا مذاق اڑاتے ہوئے ماہرین کی رائے کو مسترد کردیا تھا۔

امریکی صدر نہ صرف آنے والوں سے ہاتھ ملاتے تھے بلکہ انہوں نے وائرس کا ٹیسٹ کرانے میں بھی ہچکچاہٹ ظاہر کی تھی اور سماجی فاصلے کے اصول کی بھی خلاف ورزی کرتے نظر آئے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.