Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

خوشحالی کا تاریخی موقع,افغان قیادت فائدہ اٹھائے ,عمران خان کا عبداللہ عبداللہ کو ٹیلی فون

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان نے افغان ہائی کونسل برائے قومی مفاہمت کے چیئرمین ڈاکٹر عبداﷲ عبداﷲ سے ٹیلی فون پر گفتگو کی، عمران خان نے پاکستان کے افغانستان کے ساتھ برادرانہ تعلقات کو مزید مستحکم بنانے اور تمام شعبوں میں تعاون بڑھانے کے عزم کا اعادہ کیا، وزیراعظم آفس کے میڈیا ونگ سے جاری بیان کے مطابق ٹیلیفونک رابطہ کے دوران وزیراعظم عمران خان نے پاکستان اور افغانستان کے درمیان دوطرفہ تعلقات جن کی بنیاد مذہب، ثقافت، تاریخ اور دونوں ملکوں کے عوام کے درمیان قریبی رابطوں پر ہے کی اہمیت اجاگر کرتے ہوئے ہر شعبہ میں تعلقات بڑھانے کی ضرورت کے عزم اعادہ کیا، وزیراعظم نے کہا ان کا طویل عرصہ سے یہ یقین ہے افغانستان تنازع کا کوئی فوجی حل نہیں ہے اور سیاسی حل کی طرف آگے بڑھنے کا واحد راستہ بات چیت ہے ، افغان امن عمل میں پاکستان کے مثبت کردار پر روشنی ڈالتے ہوئے وزیراعظم نے زور دیا افغانستان کی قیادت خوشحالی، سلامتی اور پائیدار امن کیلئے اس تاریخی موقع سے فائدہ اٹھائے اور مسئلہ کے سیاسی حل کیلئے کردار ادا کرے ، وزیراعظم نے کہا پاکستان جلد انٹرا افغان مذاکرات کے آغاز کا منتظر ہے ، وزیراعظم نے ڈاکٹر عبداﷲ عبداﷲ کیلئے قومی مفاہمتی کونسل کے چیئرمین کے طور پر نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے توقع ظاہر کی کہ کونسل اپنے مقاصد کے حصول میں کامیابی حاصل کرے گی، وزیراعظم نے ڈاکٹر عبداﷲ عبداﷲ کو جلد پاکستان کے دورہ کی دعوت بھی دی تاکہ افغان امن عمل کو آگے بڑھانے اور دونوں ملکوں کے درمیان قریبی دوستانہ تعلقات کو مزید مستحکم بنایا جا سکے ، عبداللہ عبداللہ نے امن عمل میں کردار ادا کرنے پر پاکستان کا شکریہ ادا کیا، افغان قومی مفاہمتی کونسل کے سربراہ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری کردہ اپنے بیان میں بتایا کہ پاکستان کے وزیراعظم عمران خان سے ٹیلیفونک رابطے میں پاک افغان تعلقات کے فروغ پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا، ہم نے تشدد کو کم کرنے اور انٹرا افغان مذاکرات جلد شروع کرنے کے عزم کا اظہار کیا، عبد اللہ عبد اللہ نے لکھا دورہ پاکستان کی دعوت دینے پر عمران خان کا شکریہ ادا کرتا ہوں ، جلد پاکستان کا دورہ کروں گا،دریں اثنا وزیر اعظم عمران خان نے کراچی کے عوام کو ریلیف مہیا کرنے کیلئے تمام وفاقی اداروں کو احکامات جاری کردئیے ، عمران خان نے کہا کراچی کے شہریوں کو ہر ممکن ریلیف مہیا کریں، وفاقی ادارے اپنے تمام وسائل بروئے کار لائیں گے اور کراچی اور اس کے عوام کو تنہا نہیں چھوڑیں گے ،وزیراعظم نے نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی اور پاک فوج کے اقدامات کی تعریف کی،علاوہ ازیں وزیراعظم نے کہاہے ملکی معیشت صحیح سمت کی طرف گامزن ہے ، حکومت نے مقامی صنعت کے فروغ کیلئے بھی خاطر خواہ اقدامات کیے ہیں،حکومت برآمدات کے فروغ کیلئے میڈ ان پاکستان پالیسی پر عمل پیرا ہے ،ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیراعظم آفس میں ایکسپورٹرز کے وفد سے ملاقات میں کیا،وزیراعظم نے ملکی برآمدات بڑھانے کیلئے سازگار ماحول کی ضرورت پر زور دیا، مزید برآں وزیر اعظم نے کہاہے کمزور اور غربت کا شکار افراد کی ضروریات کو پورا کرنا ہماری ذمہ داری اور اولین ترجیح ہے ،حکومت کی بھرپور کوشش ہے کہ سبسڈی کے نظام کو موثر ، شفاف اور اہداف کے مطابق بنایا جائے اور اس امر کو یقینی بنایا جائے کہ سرکاری خزانے سے خرچ کی جانے والی رقم کا بہترین استعمال ہو،ان خیالات کا اظہار انہوں نے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعظم نے کہا ماضی میں سبسڈٰ ی کے نظام میں موجود خامیوں کو دور کرنے کی ضرورت کو یکسر نظر انداز کیا جاتا رہا جس کی وجہ سے ان وسائل سے وہ طبقات بھی فائدہ اٹھاتے رہے جو اس کے مستحق نہیں تھے ، وزیرِاعظم نے معاون خصوصی سماجی تحفظ، سیکرٹری خزانہ، یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن کو ہدایت کی غریب اور کم آمدنی والے طبقات کو بنیادی اشیا کے حوالے سے ٹارگٹڈ سبسڈی کی فراہمی کی تجاویز کو جلد حتمی شکل دی جائے ،آٹے اور چینی کی قیمتوں کے حوالے سے جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے عمران خان نے کہا گندم اور چینی جیسی بنیادی اشیا کی وافر فراہمی اور مناسب قیمتوں کو یقینی بنانا حکومت کی اولین ترجیح ہے ، بڑھتی ہوئی آبادی اور قابل کاشت زمینوں میں کمی ہونے کے پیش نظر مستقبل کی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے فوڈ سکیورٹی کے حوالے سے قلیل المدتی، وسط مدتی اور طویل المدتی پالیسی تشکیل دی جائے ،اس حوالے سے وزیراعظم نے وزیر نیشنل فوڈ سکیورٹی کی سربراہی میں وزرا پر مشتمل اعلیٰ سطح کی کمیٹی کے قیام کی ہدایت کی ۔اجلاس میں وزیر اطلاعات شبلی فراز، وزیر صنعت حماد اظہر، وزیر نیشنل فوڈ سکیورٹی سید فخر امام، عبدالحفیظ شیخ ، مرزا شہزاد اکبر، معاونین خصوصی لیفٹیننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ، ڈاکٹر شہباز گل، عثمان ڈار اور سینئر افسر شریک ہوئے ، چاروں صوبائی چیف سیکرٹری صاحبان نے ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کی،وزیراعظم نے ہدایت کی آنے والے کرشنگ سیزن کو مقررہ وقت پر یقینی بنانے کے حوالے سے اقدامات اٹھائے جائیں،ملاوٹ کی روک تھام کے حوالے سے وزیراعظم نے تمام چیف سیکرٹری صاحبان کو ہدایت کی صوبائی دارالخلافوں میں فوڈ اینڈ ڈرگ ٹیسٹنگ لیبارٹریز کے قیام کیلئے اقدامات کیے جائیں،وزیراعظم کی زیرصدارت اجلاس میں ٹائیگرفورس ای گورننس پلان پر مشاورت کی گئی، معاون خصوصی عثمان ڈار نے مستقبل کی منصوبہ بندی کاجامع پلان پیش کیا،عمران خان نے ٹائیگر فورس کے ذریعے ای گورننس سسٹم لانے کی منظوری دے دی، جس کے بعد ٹائیگرفورس کے نوجوان مقامی سطح پر گورننس کے معاملات رپورٹ کرسکیں گے ،اشیائے ضروریہ کی قیمتوں اور صحت کی سہولتوں سے متعلق حکام کو آگاہ کیا جائے گا اور پناہ گاہوں، مارکیٹوں، تعلیمی اداروں اورعوامی مقامات پر سروسز کی فراہمی رپورٹ ہوگی،تھانے کچہری، لینڈ ریکارڈ، بجلی چوری اورعوامی شکایات پر بھی نظر رکھ سکیں گے جبکہ سروسز کی فراہمی سے انکار یا رشوت ستانی کی کوشش کوبھی رپورٹ کیا جاسکے گا،وزیراعظم نے ٹائیگر فورس کالجوں اور جامعات تک لے جانے کا فیصلہ کرتے ہوئے عثمان ڈار کو تعلیمی ادارے کھلتے ہی رکنیت مہم تیز کرنے کی ہدایت کردی،وزیراعظم سے وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری نے ملاقات کی اور جیلوں میں قید خواتین کی صورتحال اور ان کو ریلیف فراہم کرنے کے حوالے سے سفارشات پر مبنی رپورٹ پیش کی،وزیراعظم نے مئی کے آخر میں جیلوں میں قید خواتین کی حالت ِ زار کا جائزہ لینے کیلئے وزیر برائے انسانی حقوق کی سربراہی میں اعلیٰ سطح کی کمیٹی قائم کی تھی،وزیراعظم نے کہا مہذب معاشروں کی پہچان انسانی حقوق کے تحفظ کو یقینی بنانے سے ہوتی ہے ، انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کا تحفظ موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے ،اس ضمن میں ہر ممکن کوشش کی جائے گی،عمران خان سے وفاقی وزیر بین الصوبائی رابطہ ڈاکٹر فہمیدہ مرزا، صدر پاکستان ہاکی فیڈریشن خالد سجاد کھوکھر اور سیکرٹری ہاکی فیڈریشن آصف باجوہ نے بھی ملاقات کی، ملاقات میں ہاکی کے فروغ اور پاکستان ہاکی فیڈریشن کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا، عمران خان نے ہاکی فیڈریشن کو ہاکی کی ترویج اور نئے ٹیلنٹ کو ابھارنے کے لئے اقدامات کرنے کی ہدایات دیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.