Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

افغان قومی سلامتی کے مشیر سے نواز شریف کی ملاقات: وزرا کی تنقید، مریم کا جواب

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

گذشتہ روز پاکستان کے سابق وزیرِ اعظم اور مسلم لیگ نواز کے سربراہ نواز شریف سے افغانستان کے سکیورٹی ایڈوائزر حمد اللہ محب اور وزیر برائے امن و امان سید سعادت منصور نادر کی لندن میں ملاقات پر پاکستان کی حمکران جماعت تحریک انصاف کی جانب سے شدید اعتراضات سامنے آ رہے ہیں۔

پاکستان کے سوشل میڈیا پر بھی اس ملاقات کے حوالے سے شدید ردِعمل سامنے آیا ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ رات افغانستان کی قومی سلامتی کونسل (این ایس سی) کے ٹویٹر ہینڈل سے اس ملاقات کی تصاویر اور پریس ریلز جاری کی گئی ہے۔

دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ کی نائب صدر مریم نواز نے اس ملاقات پر ہونے والی تنقید کا جواب دیتے ہوئے لکھا ہے کہ اپنے پڑوسیوں کے ساتھ پر امن تعلقات نواز شریف کے نظریہ کی اساس ہے جس کے لیے انھوں نے انتھک محنت کی ہے۔

مریم نواز نے لکھا ’سفارت کاری کا بنیادی روح ہی سب سے بات چیت کرنا، دوسروں کا نقطہ نظرسننا اور اپنا پیغام پہنچانا ہے: یہی چیز اس حکومت کو سمجھ نہیں آرہی اور اسی وجہ سے یہ بین الاقوامی محاذ پر مکمل ناکام ہے۔‘

MaryamNSharif

نواز شریف سے حمد اللہ محب کی ملاقات پر آخر اتنا شدید ردِعمل کیوں؟

پاکستان، افغانستان اور انڈین میڈیا میں چلنے والی چند رپورٹس کے مطابق رواں برس مئی میں افغانستان کے سکیورٹی ایڈوائزر حمد اللہ محب افغانستان کے صوبے ننگرہار میں ایک خطاب کے دوران پاکستان پر طالبان کی مدد کے الزامات عائد کرتے ہوئے انتہائی نامناسب الفاظ استعمال کیے اور پاکستان کو ’بروتھل ہاؤس (چکلے)‘ سے تشبیہ دی تھی، جس کے بعد پاکستان نے افغانستان کی حکومت کو پیغام دیا تھا کہ پاکستان سکیورٹی ایڈوائزر کے ساتھ کسی قسم کا سرکاری رابطہ نہیں رکھے گا۔

حمد اللہ کے بیان پر ردعِمل دیتے ہوئے 5 جون کو ملتان میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا تھا ’عمران خان اور جنرل قمر جاوید باجوہ امن کا پیغام لے کر افغانستان جاتے ہیں اور تم پاکستان کو چکلے سے تشبیہ دیتے ہو؟ آپ کو شرم آنی چاہیے۔ ان الفاظ پر تمھیں ندامت ہونی چاہیے۔‘

وزیِرِ خارجہ کا یہ بھی کہنا تھا ’جب سے میں نے تمہاری ننگرہار میں کی گئی تقریر سننی ہے میرا خون کھول رہا ہے۔ اور میں ڈنکے کی چوٹ پر کہہ رہا ہوں کہ اپنے رویے پر نظر ثانی کرو اور میں بین الاقوامی برادری سے کہتا ہوں کہ اگر یہ رویہ جاری رہا تو یہ صاحب جو خود کو افغانستان کا نیشنل سیکورٹی ایڈوائزر کہتے ہیں، درحقیقت یہ سپوئلر (ایسا شخص جو معاملات خراب کرنے کا باعث بنے) کا کردار ادا کر رہے ہیں اور افغانستان کے امن کی راہ میں رکاوٹیں کھڑی کر رہے ہیں اور ماحول کو بگاڑنے کی کوشش کر رہے ہیں۔‘

@NSCAfghan

،تصویر کا ذریعہ@NSCAFGHAN

ملاقات میں کیا امورِ زیرِ بحث آئے؟

این ایس اے کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز میں بتایا گیا ہے کہ افغانستان کے سکیورٹی ایڈوائزر حمد اللہ محب اور وزیر مملکت برائے امن سید سادات نادری نے سابق وزیر اعظم نواز شریف سے لندن میں ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

پریس ریلیز کے مطابق ملاقات میں اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ باہمی احترام اور ایک دوسرے کے اندرونی معاملات میں عدم مداخلت کی پالیسی دونوں ممالک کے مفادات میں ہے۔

ملاقات میں زور دیا گیا کہ دونوں ممالک میں جمہوریت کو مستحکم کرنے سے دونوں اقوام استحکام اور خوشحالی کی راہ پر گامزن ہو سکتی ہیں اور اس سے یہ خطہ رابطوں اور تجارت میں آسانیاں پیدا ہوں گی۔

حمد اللہ محب نے پاکستان میں جمہوری جدوجہد کی حمایت کی۔ سابق وزیر اعظم شریف کا کہنا تھا کہ ایک مضبوط اور مستحکم افغانستان، پاکستان اور خطے کے مفاد میں ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.