Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

پرستار کامیابی کے خواہشمند، ٹیم کی خراب کارکردگی پر سب کو دکھ ہوتا ہے, وسیم خان

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کراچی ( اسپورٹس ڈیسک )  چیف ایگزیکٹو پی سی بی وسیم خان کا کہنا ہے کہ پرستار کامیابی کے خواہشمند ہوتے ہیں لہٰذا ٹیم کی خراب کارکردگی پر سب کو دکھ ہوتا ہے ،ناکامی پر تنقید فطری امر ہے مگر نظام کی تبدیلی کے بعداچھے نتائج آنے میں کچھ وقت لگے گا،کھلاڑی اور کوچز مل کر مثبت تبدیلی کیلئے اپنی کوششیں کر رہے ہیں،کوویڈ کے باوجود ڈومیسٹک سیزن مکمل کرنے پر پاکستانی کاوشوں کو دنیا بھر میںسراہا جا رہا ہے ،جنوبی افریقہ کا پاکستان میں کھیلنا جذباتی لمحہ ہوگا۔پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو وسیم خان کا کہنا ہے کہ قومی کرکٹ ٹیم کی کارکردگی پر مایوسی ایک فطری امر ہے جس پر کسی بھی کرکٹ بورڈ کو تنقید کا سامنا رہتا ہے اور یہ کوئی اہم مسئلہ نہیں کیونکہ بورڈ حکام اپنے فرائض کی انجام دہی کر رہے ہیں اور بہترین گورننس کی کوشش بھی کی جا رہی ہے ۔وسیم خان کا کہنا تھا کہ شائقین کرکٹ پاکستانی ٹیم کو کامیاب دیکھنا چاہتے ہیں اور جب کامیابی نہیں ملتی تو سب کو دکھ ہوتا ہے تاہم کسی بھی نظام کی تبدیلی کے بعد اچھے نتائج آنے میں کچھ وقت لگتا ہے جس کیلئے کھلاڑی اور کوچز مل کر مثبت تبدیلی کیلئے اپنی کوششیں کر رہے ہیں اور جس انداز سے کوچز کی حمایت کی جا رہی ہے اس کے بعد یقین ہے کہ پاکستان کرکٹ میں مثبت اور موثر تبدیلی ضرور آئے گی۔چیف ایگزیکٹو کا کہنا تھا کہ پی ایس ایل اور پی سی بی کو ایک ساتھ چلنا ہے اور چونکہ فرنچائز نے سرمایہ کاری کی ہے تو انہیں اس کا اچھا صلہ لازمی ملے گا کیونکہ چھوٹے موٹے مسائل حل ہو چکے ہیں جبکہ باقی بھی مل بیٹھ کر سلجھا لیں گے اور یہی وجہ ہے کہ 20 فروری سے پی ایس ایل کے چھٹے ایڈیشن کا آغاز ہورہا ہے ۔ فیوچر ٹور پروگرام اور آئی سی سی ایونٹس کیلئے میزبانی کی پیشکش کو اہمیت کا حامل قرار دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اکتوبر سے نومبر تک گلوبل ایونٹس کی میزبانی کیلئے درخواستیں دے دی جائیں گی اور یقین ہے کہ پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کا سلسلہ جاری رہے گا۔وسیم خان کا کہنا تھا کہ وہ پاکستان میں اپنے کام کا لطف اٹھاتے ہوئے زندگی سے بھی لطف اندوز ہو رہے ہیں اور پاکستان میں انہیں کسی بھی قسم کا مسئلہ درپیش نہیں ہے جہاں چودہ سال میں جنوبی افریقی ٹیم کا پہلی مرتبہ کھیلنا ایک جذباتی ہی نہیں بلکہ تاریخی لمحہ بھی ہوگا اور پی سی بی کے علاوہ کھیل کے پرستار بھی ان لمحات کو محسوس کر رہے ہیں۔ وسیم خان کا کہنا تھا کہ کوویڈ کے باوجود ملک میں ڈومیسٹک سیزن کی تکمیل پر پاکستانی کاوشوں کو ساری دنیا میں سراہا جا رہا ہے اور عالمی سطح کے براڈکاسٹرز سے معاہدوں کے باعث دنیا کے بیشتر ممالک میں پاکستان کے میچوں کا ٹیلی کاسٹ ہونا کامیابی کا ثبوت ہے ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ایسوسی ایشنز کی کمیٹیاں بنانے میں اگرچہ کچھ وقت لگ گیا مگر بعض چیزیں کنٹرول سے باہر ہوتی ہیں لہٰذا اب جلد ہی اس حوالے سے کام ہوگا ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.