Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

بلوچستان کو مقبوضہ صوبہ بنایا گیا ہے , عثمان کاکڑ

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کوئٹہ  : پشتونخواملی عوامی پارٹی کے صوبائی صدر عثمان خان کاکڑ نے صوبائی اسمبلی کے سامنے متحدہ اپوزیشن جماعتوں کے احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سیاست میں مداخلت کے باعث آج عوام پر نااہل اور سلیکٹڈ حکومت مسلط ہے ، اسٹیبلشمنٹ نے ہمارے صوبے کو مقبوضہ صوبہ بنا کررکھا ہے ، صوبے کو کسی کی میراث نہیں بننے دینگے۔ تمام صوبے میں سویلین مارشلاء نافذ ہے اور ہمارے عوام کو ہر قسم کی حقوق زندگی سے محروم رکھا گیا ہے ، مسلط حکومت کے خلاف متحدہ اپوزیشن کا احتجاج قابل تقلید ہے ، میڈیا کا کردار انتہائی عوام اور صوبہ دشمن ہے ، 17جون کے پہیہ جام ہڑتال کو کامیاب بنانا ٹرانسپورٹرز ، زمینداروں ،ملازمین، تاجروںتمام عوام کی ذمہ داری ہے اور یہ جمہوری حق ہمیں ملک کا آئین دیتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جن لوگوں نے 2018کے انتخابات میں عوام کے حق رائے دہی پر پر ڈاکہ ڈالا انکا 2023کے انتخابات میں بھی یہی منصوبہ ہے لیکن پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ ان کے اس عوام دشمن منصوبے کو ناکام بنانے کیلئے ہر جمہوری جدوجہد کریگی۔

انہوں نے کہا کہ خضدار سے لیکر چمن تک یعنی پورے صوبے میں کئی بھی امن وامان نہیں ، ہمارے صوبے کے بیروزگار نوجوانوں کیلئے نہ ملازمتیں ہیں اور نہ ہی انہیں کاروبار کا حق دیا جارہا ہے چمن تفتان میں مسلسل پشتون بلوچ عوام کے کاروبار کو بند رکھا گیا ہے یہاں کے عوام کا روزگار اور ذریعہ معاش صرف انہی علاقوں پر میسر ہیں اور مرکزی وصوبائی حکومتیں مسلسل پشتون وبلوچ اقوام کے معاشی قتل عام میں مصروف عمل ہیں جو کہ انتہائی قابل گرفت عمل ہیں۔جبکہ مختلف اداروں کے (ریٹائرڈ) لوگ بھی کاروبار اور ملازمتیں کررہے ہیں۔ صوبے کی اپنی فورسز پولیس ، لیویز،ضلعی انتظامیہ حتی کہ تمام سول بیوروکریسی کو مفلوج بنا کر رکھا گیا ہے صوبے میں اس وقت چوروں ،ڈاکوئوں ، لینڈ مافیا ، منشیاف فروشوں ، ڈیٹ اسکوائر والے خفیہ ایجنسیوں کی سربراہی میں عوام کو خوفزدہ کررہے ہیں اور عوام کی جدی پشتی زمینوں پر قبضہ کررہے ہیںان عناصر کے خلاف ہمیں عوام کی تائید حمایت کے ساتھ جمہوری احتجاج کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ہمار ے صوبے میں سیکورٹی پولیس اور لیویز کے حوالے کردیا جائے اور ایف سی کی تمام چیک پوسٹیں ختم کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ یہاں دہشتگردوں کو پالا جارہا ہے اور عوام کے خلاف کارروائی کی جارہی ہیں جو کسی صورت قابل قبول نہیں۔ انہوں نے کہا کہ صاف شفاف انتخابات منعقد کیئے جائیں اور عوام کو اپنے حقیقی نمائندوں کو انتخابات کرنے کا حق دیا ہے اور انتخابات اور سیاست میں اسٹیبلشمنٹ اور انٹیلی جنس اداروں کا کوئی مداخلت نہ ہو کیونکہ سیاست عوام کا کام ہے نہ کہ سرکاری ملازمین کا جن کی تنخواہیں عوام کے ٹیکسز سے دی جاتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ معزز عدالت کے فیصلے کی روشنی میں ڈی ایچ اے کے خلاف فیصلہ دے دیا گیا لیکن صوبے کے عوام دشمن حکومت کے وزیر اعلیٰ نے عدالت کے اس فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے سٹے لے لیا ہے ۔ یہاں عوامی کی زمینوں کا سیلٹمنٹ کا مسئلہ ہے لیکن یہ حکومت مافیا ز کی سرپرستی کررہی ہیں اور عوام کی زمینوں پر قبضہ کرنے کیلئے موقع فراہم کررہی ہیں اور اس کی آڑ میں سیٹلمنٹ نہیں کررہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح اسرائیل نے فلسطین کی زمینوں پر قبضہ کر رکھا ہے اسلام آباد اور اسٹیلبشمنٹ والے اس صوبے کو مقبوضہ زمین کی نظر سے دیکھ رہے ہیں اور یہاں ہمارے صوبے کو مقبوضہ بنانے کی کوششیں کرتے ہوئے پشتون بلوچ اقوام کی سرزمینوں پر قبضہ کرررہی ہیں اور وہ یہ غلط فہمی میں ہیں کیونکہ صوبے کے پشتون بلوچ اقوام نے فرنگیوں سمیت ہر مارشلاء کے خلاف جدوجہد کی ہے اور ہم اس سول مارشلا کو بھی نہیں مانتے ۔ کیونکہ اس وقت ملک اوربالخصوص صوبے میں سویلین مارشلاء نافذ ہے خدا نے ہمیں آزاد پیدا کیا ہے ہم کسی کی غلامی تسلیم نہیں کرتے اور اس سویلین مارشلاء کے خلاف تمام سیاسی جمہوری جماعتوں اور عوام کو متحد ہونا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ متحدہ اپوزیشن جماعتوں کا صوبائی سلیکٹڈ حکومت کے حوالے سے مطالبات کی حمایت کرتے ہیں اور انہیں من وعن تسلیم کرنا چاہیے اور گزشتہ تین مالی سالوں کے بجٹ کا بھی ازالہ کرنا چاہیے ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.