Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

پاکستان اور ترکی دو ملک ایک قوم، آذر بائیجان جنگ میں برادر ملک کا ساتھ دیا : سربراہ پاک فضایہ

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

انقرہ :  پاک فضائیہ کے سربراہ مجاہد انور نے کہا ہے کہ پاکستان اور ترکی کو سرحدی معاملے پر مشترکہ چیلنجز کا سامنا ہے ۔ خطے میں امن کے لیے دونوں ممالک کا مشترکہ ویژن ہے ۔ ہم دو ملک ایک قوم ہیں۔ترک خبر رساں ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے پاک فضائیہ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ پاکستان اور ترکی کے درمیان بہترین تعلقات ہیں، اسلام آباد اور انقرہ جیسی دوستی کی خواہش دنیا رکھتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کیخلاف جنگ میں ترکی کیساتھ ہیں، انقرہ اور سائپرس کے معاملے پر ترکی کے ساتھ ہیں۔فضائیہ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ سکیورٹی چیلنجز سے متعلق ترکی کو سرحدی خطرات کا سامنا ہے ، پاکستان کو بھی اسی طرح کے خطرات کا سامنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ آرمینیا اور آذر بائیجان کی جنگ میں ترکی کی طرح برادر ملک کا ساتھ دیا۔ اس جنگ میں آذر بائیجان نے ترکی کے ڈرونز کا استعمال کیا جس کی وجہ سے مسلم ملک کو فتح ملی۔مجاہد انور خان نے مزید کہا کہ پاکستان اور ترکی کے درمیان دفاعی انڈسٹری میں رشتے مضبوط ہو رہے ہیں، اسلام آباد تعلقات میں مزید وسعت چاہتا ہے ، فوجی تعاون اقتصادی تعاون میں بدلنا چاہیے ۔کشمیر سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں ایئر چیف کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر سے متعلق ترک موقف ہمارا لیے بہت اہم ہے ، ترکی کے صدر رجب طیب اردوان، ترک وزیر خارجہ، پارلیمنٹ کے سپیکر سمیت اہم ارکان عالمی سطح پر کشمیر کا مسئلہ اٹھاتے رہتے ہیں۔بھارت سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان ہمسایہ ممالک کے ساتھ دوستانہ تعلقات چاہتا ہے ، تاہم بھارت نے ہماری پیشکش کو مسترد کر دیا۔ان کا کہنا تھا کہ بھارت افغانستان میں پراکسی وار کر کے امن کو برباد کر رہا اور دہشتگردوں کی پشت پناہی کر رہا ہے ۔ایئر چیف مجاہد انور کا کہنا تھا کہ فروری 2019ء کو بھارتی فضائیہ کا حملہ بہت بڑی غلطی تھی، فروری 2019ء کے حملے کے بعد پاکستان کو جواب دینا تھا اور ہمارا جواب بہت بلند اور واضح تھا، نئی دہلی کو اس سے سبق حاصل کرنا چاہیے ۔ نئی دہلی ہمسایہ ممالک کی علاقائی سالمیت کا احترام نہیں کرتا۔چین سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں پاک فضائیہ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ چین کے ساتھ ہمارے تعلقات بہت اچھے ہیں، بیجنگ عالمی طاقت اور ان کی معیشت بہت مضبوط ہے ، دونوں ممالک سیاست سے لیکر فوج تک بہت سے شعبوں میں ایک دوسرے کا ساتھ دیتے ہیں،ایئر چیف کا کہنا تھا کہ پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) اقتصادی تعاون بڑھانے کا بہترین منصوبہ ہے جو خطے میں امن ، استحکام اور خوشحالی پیدا کرے گا۔افغانستان سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ افغانستان میں امن چاہتے ہیں، ہمسایہ ملک میں امن کی حمایت جاری رکھیں گے ، وہاں پر جنگ کا خاتمہ ہونا چاہیے ۔ ایک پر امن افغانستان پاکستان کے مفاد میں ہے ۔ادھر سربراہ پاک فضائیہ ایئر چیف مارشل مجاہد انور خان نے ترک دفاعی صنعتوں کے صدر پروفیسر ڈاکٹر اسماعیل دمیر سے ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران ایئر چیف نے ترک دفاعی پیداوار کے شعبے کو سراہا جس نے پچھلے چند سالوں میں قابلِ قدر ترقی کی ہے ۔ انہوں نے اس عزم کا بھی اعادہ کیا کہ طرفین کی صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے ترک دفاعی پیداوار کے شعبے کے ساتھ تعلقات کو مزید مستحکم اور مربوط کیا جائے گا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.