Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

پاک افغان بارڈر باڑ کی تنصیب سے متعلق جائزہ اجلاس قلعہ عبداللہ بمقام چمن میں منعقد ہوا

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاء اللہ لانگوکی زیر صدارت پاک افغان بارڈر باڑ کی تنصیب سے متعلق جائزہ اجلاس قلعہ عبداللہ بمقام چمن میں منعقد ہوا ۔ اجلاس میں باڑ کی مکمل و بروقت تنصیب اور فوری نوعیت کے عوامی مسائل کے حل کے سلسلے میں پچھلے اجلاسوں میں کئے گئے فیصلوں پر پیشرفت کا جائزہ لیاگیا۔اجلاس میں باڑ سے متعلق ممکنہ معاشی اثرات اور منصوبے پر اب تک ہونے والی پیشرفت کے حوالے سے شرکاء کو تفصیلی بریفینگ دی گئی.  اجلاس میں کمانڈر سدرن کمانڈ سے برگیڈیئر واجد،  ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ حافظ عبدالباسط، کمانڈنٹ چمن اسکاؤٹس کرنل راشد،  کمشنر کوئٹہ ڈویژن اسفند یار کاکڑ ، ڈی آئی جی کوئٹہ اظہر اکرام، ڈپٹی کمشنر قلعہ عبداللہ جاوید مینگل، شہباز حسین ،عمیر بٹ سید فاروق شاہ ،اور صوبائی محکموں کے انتظامی و متعلقہ ڈویژنل انتظامیہ ،پولیس، کے علاوہ دیگر صوبائی اداروں کے عسکری و اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔

وزیر داخلہ نے اجلاس کے شرکاء سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پاک افغان سرحد بارڈر پراب تک لگائی جانے والی 187 کلومیٹرباڑ لگانے سے صوبے میں دہشت گردی کے واقعات میں نمایاں کمی آئی ہے جبکہ باقی ماند باڈر پر باڑ کی تنصیب دونوں ممالک کے مشترکہ مفاد میں ہے۔وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ پائیدار امن کیلئے باڑ کی تنصیب سمیت مربوط بارڈر پر مزید مؤثر سکیورٹی میکنزم بھی ضروری ہے جبکہ پاک افغان بارڈر پر باڑ کی

مکمل ہونے سے سٹریٹجک، دفاعی اور معاشی فوائد کیساتھ اغوا برائے تاوان کے نیٹ ورک کا خاتمہ بھی ممکن ہو گا انہوں نے کہا کہ باڑ کی تنصیب سے سرحدی دفاع مزید مضبوط بنا رہے،جبکہ ماضی میں ان علاقوں میں غیر قانونی امدورفت آسانی سے ممکن تھی جس کے باعث مزکورہ علاقے کالعدم گروہوں، سمگلروں اور غیر قانونی سرگرمیوں کے اڈے بن گئے تھے جس کے پیشِ نظر باڑ لگانے کا فیصلہ کیا گیا تاکہ غیر قانونی نقل و حرکت اورمنفی سرگرمیاں کو کنٹرول کیا جاسکے۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ مختصر عرصہ میں چار اجلاسوں کے انعقاد کا مقصد پاک افغان بارڈر پر باڑ سے متعلق عوامی فلاح و بہبود کے منصوبے کی بروقت تکمیل اور لوگوں کو اس حوالے سےدرپیش مسائل کا فوری حل ہے وزیر داخلہ نے متعلقہ حکام کو منصوبے کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کرنے اور اس مقصد کے حصول کے لیے تمام دستیاب آپشنز زیر غور لانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ یہ منصوبہ صوبے میں امن وامان کی صورتحال کو مزید مستحکم بنانے کے لیے ناگزیر ہے جس پر عملدرآمد وقت حاضر کی اہم ترین ضرورت ہے وزیر داخلہ نے کہاکہ باڑ  کی تنصیب کے عمل کو تیز  کرنا حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے  اور اس مقصد کیلئے تمام سٹیک ہولڈرز کو اپنی ذمہ داریاں بروقت پوری کرنے کی ضرورت ہے اُنہوں نے خصوصی طور پر ڈپٹی کمشنرکو تیز تر اقدامات یقینی بنانے کی ہدایت کی اور واضح کیا کہ منصوبے پر کام کے سلسلے میں مقررہ مدت میں کسی قسم کی توسیع کی گنجائش نہیں انہوں نے کہا کہ مقامی آبادی کے لوگوں کو ہر ممکن حد تک تحفظ دینے کی ہدایت کی اور کہا کہ یہ منصوبہ نہ صرف مقامی آبادی کے لئے سہولت فراہم کریگا بلکہ قومی و بین الاقوامی سیاحوں کے لئے بھی فائدہ مند ہوگاوزیر داخلہ نے منصوبے سے متعلق تمام مسائل کا حل یقینی بنانے کی ضرورت پر زور دیا اور اس مقصد کے لئے فوری طور پر قابل عمل ماسٹر پلان مرتب کرنے کی بھی ہدایت کی وزیر داخلہ نے کہا کہ بلوچستان کو حقیقی معنوں میں ایک خوشحال ، ترقی یافتہ اور پر امن شہر بنانا موجودہ حکومت کا مشن ہے۔ بعد ازاں صوبائی وزیر داخلہ نے پاک افغان بارڈر پر،تصدق پوسٹ، نعیم شاہد  چیک پوسٹ ،باب دوستی، چینگیز چیک پوسٹ اور ان علاقوں کا دورہ بھی کیا جہاں پر باڑ کی تنصیب کا کام مکمل ہو چکا ہے

Leave A Reply

Your email address will not be published.