Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

بلوچستان میں امن وامان کی ابتر صورتحال کی وجہ سے 17سال سے کھیل کے میدان غیر آباد رہے: خالق ہزارہ

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کوئٹہ(آن لائن) وزیراعلی بلوچستان کے مشیر برائے کھیل، ثقافت، سیاحت و امور نوجوانان عبدالخالق ہزارہ نے کہا ہے کہ بلوچستان میں امن وامان کی ابتر صورتحال کی وجہ سے 17سال سے کھیل کے میدان غیر آباد رہے تاہم حکومت بلوچستان کے زیر اہتمام آل پاکستان چیف منسٹر بلوچستان فٹ بال گولڈ ٹورنامنٹ 2020 کا آغاز 17سال کے طویل عرصہ کے بعد کیا جارہا ہے یہ ٹورنامنٹ 3رانڈز پر مشتمل ہوگا ، پہلے رانڈ میں بلوچستان کے مختلف اضلاع کی 24ٹیمیں حصہ لیں گی جن میں سے بہترین 6ٹیمیں اگلی رانڈ میںملک کے دیگر صوبوں کے ساتھ کھیلے گی جبکہ دوسرے رانڈ سے اگلے رانڈ میں کوالیفائی کرنے والی ٹیمیں ملک کے ڈیپارٹمنٹل ٹیموں کے ساتھ نبردآزماں ہوں گی ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے کوئٹہ پریس کلب میں ٹورنامنٹ کی ٹرافی کی تقریب رونمائی کے موقع پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر سیکرٹری کھیل عمران کچکی سمیت دیگر حکام بھی موجود تھے ۔ عبدالخالق ہزارہ نے کہا کہ موجودہ حکومت کے برسراقتدار آتے ہی وزیراعلی کے وژن کے مطابق صوبے میں کھیل کی ترویج کے لئے اقدامات کا سوچا ۔ بلوچستان میں پہلی مرتبہ ساحلی گیم کرائے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت بلوچستان نے بلاتفرق صوبے کے تمام 33اضلا ع میں سپورٹس کمپلےکس بنانے کا منصوبہ شروع کیا جس میں فٹ بال سمیت تمام کھیلوں کے عالمی سطح کی سہولتیں موجود ہوں گی ۔ اس سلسلے کو برقرار رکھتے ہوئے ہر میونسپل کمیٹی میں فٹ سال گرانڈ بنایا جارہا ہے اس کے علاوہ صوبے کی تاریخ میں پہلی مرتبہ وومن فٹ سال ٹورنامنٹ کرانے کا ارادہ رکھتے ہیں ۔ کورونا لاک ڈان کے بعد دیگر صوبوں کے مقابلے بلوچستان میں سب سے زیادہ کھیلوں کی سرگرمیاں منعقد کرائی گئی ۔ انہوں نے کہا کہبلوچستان میں امن وامان کی ابتر صورتحال کی وجہ سے 17سال سے کھیل کے میدان غیر آباد رہے ، کھلاڑیوں کو مثبت سرگرمیوں اور کھیلوں میں حصہ لینے کے لئے مواقع میسر نہ ہونے کی وجہ سے کھیل کا شعبہ تباہی سے دوچار تھا ۔ بلوچستان میں 17سال بعد صوبائی حکومت کے زیر اہتمام آل پاکستان چیف منسٹر بلوچستان فٹ بال گولڈ ٹورنامنٹ 2020کا آغاز کیا جارہا ہے جو 3رانڈز پر مشتمل ہوگا ، پہلے رانڈ میں بلوچستان کے مختلف اضلاع کی 24ٹیمیں حصہ لیں گی جن میں سے بہترین 6ٹیمیں اگلی رانڈ میںملک کے دیگر صوبوں کے ساتھ کھیلے گی جبکہ دوسرے رانڈ سے اگلے رانڈ میں کوالیفائی کرنے والی ٹیمیں 21اکتوبر سے ملک کے مختلف ڈیپارٹمنٹل ٹیموں کے ساتھ نبردآزماں ہوں گی تاکہ دنیا کو یہ پیغام دیا جاسکے کہ بلوچستان میں بھی عالمی سطح کے کھیلوں کی سرگرمیاں ہورہی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی سطح کے کھیل منعقد کرائے جائیں گے جس میں دنیا کے دیگر ممالک سے سکوائش کے کھلاڑی بھی شریک ہوں گے ۔ وزیراعلی نے کورونا مرض میں مبتلا ہونے کے باعث افتتاح تقریب میں شرکت سے معذرت کی ہم ان کی صحت یابی کے لئے دعا گو ہے ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ مالی باغ گرانڈ محکمہ کھیل کے زیر انتظام نہیں تاہم میں نے اپنے ہی فنڈ سے 50لاکھ رو پے رکھے ہیں آنے والی پی ایس ڈی پی میں چمن ، گوادر ، نوشکی اور قیوم بابا گرانڈ کے لئے ایک ایک سو ملین روپے رکھے جارہے ہیں ۔ 2019میں نیشنل گیمز کچھ کوتاہیوں کی وجہ سے منسوخ کرنا پڑے تاہم رواں سال نیشنل گیمز کوئٹہ میں ہونے تھے لےکن کورونا کی وجہ سے یہاں ان کا انعقاد ممکن نہیںہوسکا ۔ تقریب کے آخر میں آل پاکستان چیف منسٹر بلوچستان فٹ بال گولڈ ٹورنامنٹ 2020کی ٹرافی کی رونمائی کی گئی ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.