Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

ایل این جی ٹرمینلز میں غیر استعمال شدہ صلاحیتوں کو کم کرنے کا امکان

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اسلام آباد  : حکومت ایل این جی کے نرخوں میں کمی اور ان کی مزید توسیع کو روکنے کے لیے مائع قدرتی گیس (ایل این جی) کے موجودہ ٹرمینلز پر غیر استعمال شدہ اور فاضل صلاحیتوں کو کم کرسکتی ہے تاکہ نجی پارٹیز کو تجارتی ٹرمینلز میں سرمایہ کاری کے لیے واضح اشارہ دیا جاسکے۔

منصوبہ بندی کمیشن کے ڈپٹی چیئرمین ڈاکٹر جہانزیب خان کی سربراہی میں اور وفاقی کابینہ کی جانب سے مقرر کردہ فنانس، پیٹرولیم اور بحری امور کے سکریٹریز پر مشتمل ایک بین الوزارتی کمیٹی اس نتیجے پر پہنچی ہے جبکہ اس حوالے سے حتمی فیصلہ بین الاقوامی کنسلٹنٹ کی جانب سے تکنیکی مطالعہ کرنے کے بعد لیا جائے گا۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ اس ہفتے توانائی سے متعلق کابینہ کی کمیٹی کی جانب سے پیش کی گئی رپورٹ میں ایک بنیادی پہلو کو مکمل طور پر نظرانداز کیا گیا ہے کہ ایل این جی اسٹوریج کی گنجائش کیسے پیدا کی جائے اور یہ کیسے یقینی بنایا جاتا ہے کہ ٹرمینل آپریٹرز ایک ہی سہولت کو دو بار فروخت نہیں کریں گے۔

گزشتہ سال تیل کی قلت کا مسئلہ، جس کی وجہ ذخیرہ نہ ہونا تھی، ایل این جی کے معاملے میں دہرائی جاسکتی ہے کیونکہ رپورٹ میں ذخیرہ کرنے کی کوئی نئی صلاحیت پیش نہیں کی گئی ہے جبکہ حفاظت کے خدشات کے اظہار کے باوجود ویلیو چین پر زیادہ دباؤ ڈالا گیا ہے۔

اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے 31 جولائی 2019 کو فیصلہ کیا تھا کہ ٹرمینل آپریٹرز اپنی اضافی ایل این جی ری گیسیفکیشن کی سہولت کی بحالی تجارتی بنیادوں پر کسی تیسرے فریق کو مختص کرسکتے ہیں بشرطیکہ ‘سرکاری کارگوز کو ہمیشہ ترجیح دی جائے’۔

کمیٹی نے تجویز دی تھی کہ ‘ موجودہ دو ٹرمینلز کے علاوہ مزید اضافے یا توسیع کی اجازت نہیں دی جائے گی تاکہ مرچنٹ کی بنیاد پر نئے ٹرمینلز کی ترقی کے لییے مارکیٹ کو واضح اشارہ دیا جاسکے’۔

اس میں مزید کہا گیا ہے کہ ٹرمینلز اور ایل این جی انفراسٹرکچر کے ذریعے تھرو پُٹ (آگے بڑھنے والی مقدار) کے لیے آزاد تھرڈ پارٹی رسک تشخیص کو پاکستان ایل این جی ٹرمینلز لمیٹڈ اور سوئی سدرن گیس کمپنی (پی ایل ٹی ایل / ایس ایس جی سی) ٹرمینل آپریٹرز سے مشاورت سے شروع کی جائے گی۔

اس میں کہا گیا ہے کہ ٹرمینلز پر اضافی تھرو پٹ کی اجازت سے پہلے تکنیکی اور آپریشنل خطرات کو کم کیا جانا چاہیے اور اوگرا کو چاہیے کہ وہ خطرے کی تشخیص پر نظرثانی کرے اور اس کے مطابق اضافی صلاحیت کے استعمال کی اجازت دے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.