Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

اقوام متحدہ کانفرنس ، افغانستان کیلئے 1ارب ڈالر کی امداد کا اعلان

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کابل ، نیویارک ، واشنگٹن  :  اقوام متحدہ کی اپیل پر افغانستان میں طالبان کی نئی حکومت کے قیام کے بعد پیدا ہونے والے ممکنہ انسانی بحران سے نمٹنے کے لئے 1ارب ڈالر سے زائد کی امداد کا اعلان کیا گیاہے ۔ گزشتہ روز جنیوا میں افغانستان کے لئے عطیات اکٹھے کرنے کے لئے ایک کانفرنس منعقد کی گئی، ڈونرز کانفرنس میں 40 ملکوں کے وزیروں اور حکومتی نمائندوں نے فزیکل اور ورچوئل شرکت کی۔ کانفرنس کا مقصد 60 کروڑ ڈالر کے عطیات جمع کرنا تھا مگر کانفرنس کے نصف تک پہنچنے تک ہی 1.1 ارب ڈالر سے زائد کے عطیات کا وعدہ کیا جا چکا تھا۔ امریکا نے 6کروڑ 40لاکھ ڈالر کی نئی امداد کا وعدہ کیا۔نیوزی لینڈ نے مزید 30 لاکھ ڈالردینے کا اعلان کیا،ناروے نے 1کروڑ 15لاکھ ڈالر اضافی دینے کا وعدہ کیا۔فرانس نے 11کروڑ80لاکھ ڈالر امداد کا اعلان کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس نے اپنی گفتگو میں عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ طالبان کے ساتھ تعلقات استوار کریں اور افغان عوام کو انتہائی ضروری امداد کی ‘لائف لائن’ فراہم کریں۔ انہوں نے کہا ملک کے ڈی فیکٹو حکام (طالبان)سے بات چیت کیے بغیر افغانستان کے اندر انسانی امداد پہنچانا ناممکن ہے ۔اس وقت طالبان کے ساتھ تعلقات قائم کرنا نہایت اہم ہے ۔انہوں نے زور دیا کہ دنیا افغان معیشت کو رقم کا سہارا دینے کے طریقے ڈھونڈے تاکہ معیشت کا انہدام روکا جا سکے جس کے افغانستان اور وسیع تر خطے کے لیے تباہ کُن نتائج ہوں گے ۔ افغانوں کو شاید ان کی سب سے خطرناک گھڑی کا سامنا ہے ۔ انہوں نے کہا اس مہینے کے آخر تک خوراک ختم ہو سکتی ہے اور ورلڈ فوڈ پروگرام نے کہا ہے کہ 14 ملین افراد بھوک کے دھانے پر ہیں۔ ڈبلیو ایف پی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈیوڈ بیسلے نے کہا کہ افغانستان کی 40 فیصد گندم کی فصل ضائع ہوئی جب کہ کوکنگ آئل کی قیمت دوگنا ہو گئی ہے اور زیادہ تر لوگوں کے پاس پیسے حاصل کرنے کا کوئی راستہ نہیں ہے ۔ سرکاری ملازمین سے لے کر پولیس اہلکارتک کسی کوبھی جولائی سے تنخواہ نہیں دی گئی۔ انٹرنیشنل آرگنائزیشن فار مائیگریشن کے سربراہ انتونیو وٹورینو نے کہا کہ افغان طبی نظام “تباہی کے دھانے پر”ہے ۔ڈبلیو ایچ او کے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس ادھانوم گیبریئس نے کہا ہے کہ عطیہ دینے والوں کے پیچھے ہٹنے کے بعد افغانستان میں سیکڑوں صحت کی سہولیات بند ہونے کا خدشہ ہے ۔ پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر فلپپو گرانڈی نے خبردار کیا کہ “بہت جلد”تخمینہ لگائے گئے نصف ملین سے کہیں زیادہ نقل مکانی ہو سکتی ہے ۔ چین اور روس نے کہا افغانستان کو بحران سے نکالنے کا بنیادی بوجھ امریکا اورمغربی ممالک کو اٹھانا چاہیے ۔ اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کی سربراہ مشیل بیچلیٹ نے طالبان پر الزام لگایا کہ وہ ایک بار پھر خواتین کو کام پر جانے کی بجائے گھروں میں رہنے ، لڑکیوں کو سکول سے دور رکھنے پر مجبور کر رہے اور مخالفین کو ظلم و ستم کا نشانہ بنا رہے ہیں۔ ادھرچینی خبررساں ادارے کے مطابق نیوزی لینڈ کی وزیرخارجہ ننایا مہوٹا نے میڈیا کو بتایاکہ افغانستان میں جاری بحران سے خواتین اور بچے زیادہ متاثر ہو رہے ہیں۔ مذکورہ فنڈز اقوام متحدہ کے 2 اداروں یونیسف اور پاپولیشن فنڈ کو فراہم کئے جائیں گے ۔علاوہ ازیں روس نے بھی افغانستان کو انسانی ہمدردی کی بنیاد پر امداد فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ وزارت خارجہ کے بیان کے حوالے سے بتایاگیا کہ افغانستان میں پہلے مرحلے میں خوراک اور ادویات فراہم کی جائیں گی۔ مزید برآں افغانستان کے سابق نائب صدرامراللہ صالح کے گھر سے 6.5ملین ڈالر ، 18 سونے کی اینٹیں برآمد کی گئی ہیں۔ افغان رہنما احمد اللہ متقی نے رقم برآمدگی کی تصدیق کی ہے ۔ انکا کہنا تھا کہ غیر ملکیوں نے امراللہ صالح جیسے لوگوں کو گزشتہ 20 سالوں میں بدعنوانی اور لوٹ مار کی مکمل آزادی دے رکھی تھی۔ادھرافغان طالبان نے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر جاری اپنے ایک وضاحتی بیان میں کہا ہے کہ ملک کی شناخت بہت اہم ہے ، ایسا کوئی فیصلہ نہیں کیا جائے گا جو وطن کے مادی اور روحانی مفادات کے خلاف ہو۔ افغانستان میں بڑے چھوٹے تمام تجارتی لین دین افغان کرنسی میں ہونگے ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.