Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

پی ڈی ایم اور اسٹیبلشمنٹ دونوں کا ہدف ملک کو توڑنا ہے‘مولانا محمد خان شیرانی

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

پشےن (اے این این)جمعیت علماءاسلام پاکستان کے مرکزی رہنما امام سیاست حضرت مولانا محمد خان شیرانی نے کہا کہ پاکستان ڈیموکرٹیک مو¶منٹ اور اسٹیبلشمنٹ دونوں کا ہدف ملک کو توڑنا ہے بلوچستان ، سندھ اور خیبر پختونخوا پہلے سے ہی مظلومیت کی فریاد میں مگن ہے اب اگر پنجاب بھی یہی نعرہ لگائے کہ ”جاگ پنجابی جاگ ۔تیری پگ نوں لگ گئی آگ“ تو حالات ٹھیک نہیں ہوں گے یہ بات انہوں نے پشےن کے علاقے منزکی میں ڈاکٹر عزیز اللہ چشتی کی رہائشگاہ پر منعقدہ تربیتی کنونشن کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی ۔اس موقع پر سید قاسم آغا ، امین اللہ امین ،مولوی عبدالقدیر،مولوی نظر حقانی ، مولوی جمیل الرحمن اور دیگر انکے ہمراہ تھے۔حضرت مولانا محمد خان شیرانی نے کہا کہ ملک میں سیاستدانوں کی جنگ نہیں بلکہ یہ اداروں کے اندر ایک تنا¶ ہے اور یہ مناسب نہیں کہ سیاسی جماعتیں اداروں کے آپس کے تنا¶ میں اپنا حصہ ڈالیں ملک میں جمہوریت کا نعرہ لگانے والی جماعتیں بغیر جماعت اسلامی کے مجھے نہیں لتا کہ کوئی اور جماعت جمہوریت کی بنیاد پر قائم یا چلتا ہو انہوں نے کہا کہ اسٹیبلشمنٹ کی اپنی ذاتی صلاحیت ہوتی ہے اور حالات کی واقفیت اور منصوبہ بندی کی مہارت میں اسکا قائل ہوں البتہ میرا اختلاف اُنکے استعمال سے ہے کہ یہ صلاحیت جس انداز سے استعمال ہورہا ہے یہ غلط ہے استعمال کیلئے جو بین الاقوامی یا علاقائی مجبوریاں ہیں انکا ہمیں بھی احساس ہے لیکن یہ مجبوری اُس حد تک بھی نہیں کہ ہم ایک آسان ترین نقطے سے اپنے امن کا آغا زنہ کرسکے اسٹیبلشمنٹ کے ذمہ داروں سے جب بھی میری نشست ہوتی ہے تو میرا مو¶قف واضح ہوتا ہے کہ صلاحیت مسلم ہے لیکن استعمال غلط ہے انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی حالات ایسے رہے تو پھر ہمارے آپس کے جھگڑے ہماری غلامی کی تنا¶ کو کم نہیں مضبوط کرئیگا آپس میں لڑنے سے دشمن کی گرفت ہم پر مضبوط ہوگی ہمیں چاہئے کہ ہم ایک دوسرے کے ساتھ مل بیٹھے جب ہم سنجیدگی سے ایک دوسرے کو بات سنیں گے تو اس سے آسان ترین نقطہ بھی نکالا جاسکتا ہے نبی کریم ﷺ کی تعلیمات میں بھی یہی ہے کہ جب کوئی کام شروع کرو تو آسان ترین نقطے سے شروع کرو انہوں نے کہا کہ یہاں حاکمیت اقوام متحدہ کی ہے اور پوری دنیا کیلئے آئین اور دستور یو این چارٹر ہے تمام ممالک اور حکومتیں انکے ساتھ معاہدوں کے ذریعے سے مربوط ہیں کوئی بھی حکومت یا مملکت اقوام متحدہ کے چارٹر سے باہر نہ کوئی قانون سازی کرسکتا ہے نہ ہی فیصلہ صادر کرسکتا ہے انہوں نے کہا کہ جمعیت علماءاسلام پاکستان ایک جماعت ہے جس کے ہم ارکان ہیں جبکہ جے یو آئی (ف) ایک گروپ ہے پارٹی کے اندر اختلاف ہے مگر جماعت دو حصوں میں تقسیم نہیں ہوا انہوں نے کہا کہ جماعت کے ذمہ دار ساتھی کہتے رہے ہیں کہ تنظیم سازی اور رکن سازی میں خیانت کی گئی ہے اب خیانت ایسا جرم ہے جس میں جھوٹ، وعدہ خلافی،دھوکہ اور خود غرضی بھی ہوتی ہے گویا منافقت کے چار خاصیت اور صفات جو نبی کریم ﷺ نے بیان فرمایا ہے منافقت میں وہ تمام شامل ہیں ہم خیانت کو پسند نہیں کرتے ہیں کبھی ساتھ بھی نہیں دیں گے انہوں نے کہا کہ تربیتی کنونشن اور کارنر میٹنگز کا مقصد جماعت کے قدیم ساتھیوں اور ہم اُسکو اپنے طور پر ان ساتھیوں کو جو جماعت کے قدیم اور مو¶قف پر قائم ہے انکو باہم مربوط رکھنے کیلئے تربیتی اجتماعات کا انعقاد کرتے رہتے ہیں اگر ہم انکے درمیان رابطے کا ذریعہ نہ بنے تو خطرہ یہ ہے کہ وہ مایوسی کے شکار ہوکر کسی اور سیاسی جماعت میں چلے جائیں گے یا پھر بلکل کام کرنے سے بھی دستبردار ہوجائیں گے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ عمران خان اور موجودہ حکومت کی چند باتیں مجھے کچھ زیادہ نامناسب نظر نہیں آتی عمران خان نے سب سے پہلے کورونا کے بارے میں جو رائے تھی کہ لوگوں کو ڈرا¶ مت ،لوگوں کو گھروں میں مت بیٹھا¶ اور دو ہاتھ کی مزدوری سے رکھا¶ مت وہ آخر تک اس با ت پر ڈٹے رہے انکی یہ مو¶قف سیاسی اور شرعی اعتبار سے معقول ہے دوسری بات انہوں نے اسٹیٹ بنک اپنی ضلعی بنکوں کو قرضے دیا کرتا تھا سوا تیرہ فیصد سود پر اب انہوں نے یہ سود کم کرواکر صرف سات فیصد کردیا ہے جو کہ بہترین اقدام ہے لگ رہا ہے2028ءتک حکومت عمران خان کی ہے۔انہوں نے کہا کہ جہانگیر ترین میدان میں آگیا ہے اُمید ہے مہنگائی کی لہر بلخصوص چینی کی قیمتوں میں نمایاں کمی دیکھنے کو ملی گی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.