Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

اپوزیشن جذباتی تقاریر سے حکومتی کارکردگی کو چھپا نہیں سکتی، بشری رند

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کوئٹہ : بلوچستان اسمبلی میں اپوزیشن اراکین جذباتی تقاریر سے حکومتی کارکردگی اور سچ عوام سے نہیں چھپا سکتے ، وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال کی قیادت میں صوبائی حکومت نے ریکارڈ ترقیاتی کام کئے جو گرائونڈ پر موجود ہیں ، خضدار میں ہندو تاجر کے قتل اور دھمکی آمیز پمفلٹس کی تقسیم سے متعلق اعلیٰ سطحی میٹنگ بلایا ہے جلد ہی ملزمان کو گرفتار کیا جائے گا ، کوئٹہ کراچی قومی شاہراہ کو توسیع کی منظوری ہوچکی ہے جس پر جلد ہی کام شروع کیا جائے گا ، وفاق کی طرز پر بلوچستان میں عوام کو ہیلتھ کارڈز جاری کئے جائیں گے جس سے کوئی بھی شخص اپنے علاج پر 5سے 10لاکھ روپے خرچ کرسکے گا ، صوبائی حکومت میں شامل اتحادی جماعتوں کے درمیان کسی قسم کے اختلافات نہیں ، صوبائی حکومت نے پچھلے سال وفاق سے 162ارب روپے کے اسکیمات منظور کروائے ، ہائیر ایجوکیشن ، ہسپتالوں ، کھیل ، امن وامان سمیت دیگر شعبوں پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے ، آنے والے بجٹ میں عوامی ضروریات ، ملازمین کی مطالبات اور ترقیاتی منصوبوں پر خصوصی توجہ دی جائے گی ۔ ان خیالات کا اظہار صوبائی وزرا ء میر ظہور احمد بلیدی، صوبائی وزیر داخلہ میر ضیا اللہ لانگو ،پارلیمانی سیکرٹری اطلاعات بشریٰ رند ، چیئرمین کیو ڈی اے مبین خان خلجی نے صوبائی وزیر ریونیومیر سلیم کھوسہ، صوبائی مشیر کھیل عبد الخالق ہزارہ، پارلیمانی سیکرٹری ماہ جبین شیراں کے ہمراہ کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

صوبائی وزیر داخلہ میر ظہور احمد بلیدی نے کہا کہ صوبائی اسمبلی میں اپوزیشن اراکین کی جانب سے حکومت پر تنقید بلا جواز ہیں ، حکومتی کارکردگی سب کے سامنے ہیں ، آسامیوں پر بھرتی کا ایک طریقہ کار ہوتاہے پچھلے ادوار میں آسامیوں پر بھرتیوں کا سلسلہ روک دیا گیا تھا تاہم موجودہ حکومت نے آتے ہی آسامیوں پر بروقت تعیناتیوں کا سلسلہ شروع کیا جو موجودہ حکومت کی کامیابی ہے اورہم نے ٹارگٹ رکھا ہے کہ پروڈکٹیو آسامیاں پر کئے جائیںبجٹ کا ماحول ہے حکومت کی کوشش ہے کہ عوام کی ضروریات ملازمین کے مطالبات اور ترقیاتی کاموں کو خصوصی توجہ دی جائیں ،بلوچستان کی تاریخ میں سب سے زیادہ پی ایس ڈی پی موجودہ دور حکومت میں بروئے کار لائی گئی ہیں ۔ حکومت نے ہر جگہ اور ہرشعبے میں کام کیا ہے نظر انداز کئے گئے سیکٹرز پر بھی توجہ دی گئی ہے ،صوبائی حکومت نے وفاقی حکومت کے ساتھ مل کر بلوچستان کی ضروریات پوری کرنے اور محرومیاں ختم کرنے کیلئے اقدامات اٹھائے ہیں ،پچھلے سال 162 ارب روپے کے اسکیمات جن میں ہوشاب آواران روڈ،ڈیمز ودیگر شامل ہیں وفاقی پی ایس ڈی پی میں منظور کرائیں انہوں نے کہاکہ محکمہ صحت ماضی میں نظرانداز رہاہے ہم نے پی جی ایم آئی فعال کردیا اورفاطمہ جناح جنرل اینڈ چیسٹ ہسپتال کیلئے بجٹ رکھاہے ، انہوں نے کہاکہ پنجگور،خاران ،جھل مگسی ،ڈیرہ مراد جمالی اور تربت ودیگر میں ڈیمز بنائے جائیںگے ،موجودہ حکومت سے قبل ہائیرایجوکیشن تباہ حال تھیںحکومت بلوچستان نے پبلک سیکٹر یونیورسٹیوں کو ضرورت کے مطابق بجٹ دیا ،39انٹرکالجز کو ڈگری کا درجہ دیاگیا،سسٹم مینجمنٹ پر توجہ اورقانون سازی جس میں 107 قوانین میں 57 پاس کئے ہیں جن میں رائٹ ٹو انفارمیشن ،ہراسمنٹ ودیگر بلز بھی شامل ہیں بہت سے قوانین میں ترمیم کی بلوچستان میں لینڈ لیز پالیسی بنائی بلوچستان فوڈ اتھارٹی قائم کیا یہاں سپورٹس ڈیپارٹمنٹ کو کوئی پوچھتا نہیں تھا لیکن بلوچستان میں سپورٹس کمپلیکسز و دیگر سرگرمیوں پر تیزی سے کام جاری ہے۔ وومن ڈیپارٹمنٹ پر کام کیا ہے جس میں خواتین کیلئے سینٹرز اور ہاسٹلز بنائے جائیںگے۔ صوبائی حکومت کے ترجمان کو کروڑوں روپے کے فنڈز دینے کے سوال پر انہوں نے کہاکہ قانون میں منتخب اور غیر منتخب کا کوئی تصورنہیں حکومت ضرورت کے مطابق پروجیکٹس کیلئے فنڈز دیتی ہے حکومتیں اپنی ضروریات کے مطابق فنڈز خرچ کرتی ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.