Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

حکومت کا 8 سے 16 مئی تک بلوچستان میں مکمل لاک ڈاﺅن کا فیصلہ 

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

 

کوئٹہ ( آئی این پی )حکومت بلوچستان کے ترجمان لیاقت شاہوانی نے کہا ہے کہ بلوچستان میں کورونا کیسز میں اضافے اور صورتحال کا بغور جائزہ لینے کے بعد صوبائی حکومت نے 8سے 16مئی تک صوبے بھر میں مکمل لاک ڈاﺅن کا فیصلہ کیاہے ، اس سے قبل تمام تر اقدامات کرکے دیکھے لےکن لوگ سنجیدگی کا مظاہرہ نہیں کررہے تھے ، لاک ڈاﺅن کے دوران تمام کاروباری ، تفریحی سرگرمیوں پر پابندی عائد کی گئی ہے ، گزشتہ روز کورونا کے 3مریض جان سے گئے ہیں ، بلوچستان میں آکسیجن کی کمی کی خبریں من گھڑت ہیں اس وقت آکسیجن سلنڈرز کی وافر مقدار موجود ہیں ، عید کے موقع پر پکنک پوائنٹس کو جانے والی تمام شاہراہوں کو بند کردیا جائے گا ، کورونا ویکسی نیشن کا عمل تیز تر کردیا گیا ہے ۔ ان خیالات کا ا ظہار انہوں نے کوئٹہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ لیاقت شاہوانی نے کہا کہ وفاقی حکومت کی جانب سے مکمل لاک ڈاﺅن کی تجویز اور فیصلہ آیا تھا تاہم بعد ازاں پنجاب اور خیبر پشتونخوا حکومتوں نے بھی نوٹیفیکیشنز جاری کئے جبکہ بلوچستان حکومت نے تمام تر صورتحال کا بخوبی جائزہ لینے کے بعد گزشتہ روز یہ فیصلہ کیا کہ صوبے میں ہمارے پاس بھی8سے 16مئی تک مکمل لاک ڈاﺅن لگانے کے سوا کوئی اور چارہ نہیں ہے کیونکہ مکمل لاک ڈاﺅن سے قبل ہم نے سمارٹ لاک ڈاﺅن سمیت تمام تر اقدامات کرکے دیکھے ، دفعہ 144لگایا ، بین الصوبائی پبلک ٹرانسپورٹ پر ہفتہ اور اتوار کو پابندی لگائی گئی اور ہفتے میں صوبے بھر میں 2روز مارکیٹیں بند رہے اس سلسلے میں عوام سے بھی تعاون کی اپیل کرتے رہیں تاکہ عوام کو کورونا وباءسے محفوظ کیا جاسکے مگر لوگوں نے سنجیدگی کا مظاہرہ نہیں کیا اور اب کیسز بڑھنا شروع ہوئے تو بلوچستان حکومت نے صوبے میں 9دن کے لئے مکمل لاک ڈاﺅن کا فیصلہ کیا ہے اور آج بروز ہفتہ سے صوبے بھر میں تمام تر کاروبار ی اور تفریحی سرگرمیوں اور پبلک ٹرانسپورٹ پر پابندی عائدکردی گئی ہے جبکہ نجی گاڑی میں 50فیصد سواری بیٹھنے کی اجازت ہوگی تاہم گراسوری ، فروٹ ، سبزی کی دکانیں ، قصائی ، بیکری ، ڈیری میڈیکل سٹورز ، بلڈبینک ، ہسپتال کھلے رہیں گے جبکہ ہوٹل ٹیک اوے سروس کے تحت کھلے رہیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ جیولری ، مہندی اور کپڑوں کی دکانوں سمیت چاند رات کے موقع پر لگانے جانے والے سٹالز لگانے بھی پابندی عائد کردی گئی ہے ، عید کے موقع پر تمام پارکس اور پکنک پوائنٹس خاص کر زیارت ، ہنہ اوڑک ، ہنہ جیل ، ملاچٹوک خضدار ، پیر غیب ، ہزارگنجی پارک ودیگر بند ہوں گے اور عید والے دن ان پک پوائنٹس کی جانب جانے والی مین شاہراہوں کو بند کردیا جائے گا اسی طرح عید والے دن لگنے والے میلوں پر بھی پابندی عائد کردی گئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ عوام سے درخواست ہے کہ عید کے موقع پر روایتی تقاریب اور میلوں میں شرکت سے گریز کریں کیونکہ پچھلے سال عید کے بعد کورونا کیسز میں اضافہ ہوا تھا اب بھی خدشہ ہے کہ اس عید کو اگر بے احتیاطی کی گئی تو کیسز میں ایک مرتبہ پھر اضافہ ہوسکتاہے ۔انہوں نے کہاکہ رواں ماہ کے پچھلے 6دنوں کے دوران اوسطاً بلوچستان میں کورونا کے مثبت کیسز کی شرح 14.1فیصد رہا ہے جو بہت زیادہ ہے جسے کنٹرول کرنے کی ضرورت ہے اور حالات بہتر ہوتے ہی پابندیاں ہٹادی جائیں گی اور معمولات زندگی معمول پر آجائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ویکسینیشن کا عمل صوبائی حکومت نے تیز کردیا ہے سول سیکرٹریٹ ، پولیس لائن ، لیویز لائن سمیت دیگر میں ماس ویکسینیشن سینٹرز قائم کئے جارہے ہیں ۔ہزارہ ٹاﺅن میں وومن ویکسی نیشن سینٹر قائم کئے گئے ہیں اسکے علاوہ تمام ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز ہسپتالوں میں ویکسی نیشن سینٹرز قائم کئے گئے ہیں اب تک 16ہزار 5سو 27ہیلتھ کیئر ورکرز کو کورونا ویکسین کی فرسٹ ڈوز لگادیا گیا ہے جبکہ 12ہزار سے زائد کو دوسرا ڈوز بھی لگایا جاچکا ہے اسی طرح 40سال سے زائد عمر کے 9ہزار 7سو 37افراد کو فرسٹ ڈوز جبکہ 18سو سے زائد کو سیکنڈ ڈوز ویکسین بھی لگادیئے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ویکسی نیشن کے عمل کو مزید تیز کیا جارہاہے ، وفاق سے مزید ویکسین بھی آجائیں گی اس طرح میڈیا کے ذریعے آگاہی مہم میں بھی تیزی لائی گئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ آئی سی یو بیڈز میں بھی اضافہ کیا جارہا ہے بی ایم سی ہسپتال میں 40بیڈز پر مشتمل آئی سی یو کو فعال کردیا گیا ہے جہاں تمام تر سہولیات موجود ہیں اسی طرح صوبے میں 8سو 27بیڈز میں آکسیجن کی سہولت موجود ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت بلوچستان میں28کورونا کے مریض مختلف ہسپتالوں زیر علاج ہیں جنہیں ہائی آکسیجن فلو پر ان کا علاج کیا جارہا ہے جبکہ صوبے میں ایکٹیو کیسز کی تعداد 14سو ہےں ۔ انہوں نے کہا کہ خوش قسمتی سے اس وقت صوبے میں وینٹی لیٹر پر کوئی مریض موجود نہیں تاہم اموات میں اضافہ ضرور ہوا ہے گزشہ روز 3افراد کورونا کے باعث انتقال کرگئے جبکہ گزشتہ ایک ہفتے کے دوران 7افراد اس مرض کے باعث زندگی سے ہاتھ وھو بیٹھے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان حکومت کسی بھی ایمرجنسی کی صورتحال سے نمٹنے کے لئے تیار ہیں اور آکسیجن کی صوبے میں کوئی شارٹیج نہیں ہے سوشل میڈیا پر آکسیجن کی کمی کے خبریں من گھڑت ہیں ایسی خبریں پروپیگنڈے کے طور پر پھیلائی جارہی ہیں اس وقت صوبے میں آکسیجن سلنڈرز وافر مقدار میں موجود ہیں ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.