Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

مکمل لاک ڈاﺅن کے فیصلے کو مسترد کرتے ہیں ، انجمن تاجران بلوچستان 

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

 

کوئٹہ ( آئی این پی )انجمن تاجران بلوچستان کے صدر رحیم آغا و دیگر نے آج بروز ہفتہ سے 16مئی تک مکمل لاک ڈاﺅن کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے حکومت سے اپیل کی ہے کہ بلوچستان کی غربت اور تاجروں کے نقصان کو مدنظر رکھتے ہوئے مکمل لاک ڈاﺅن کے فیصلے پر نظرثانی کی جائے ، دکانوں اورمارکیٹوں کی بندش کی بجائے ایس او پیز طے کیا جائے ، کاروبار بند کرنے کی بجائے وہ جیل جانے کو ترجیح دیں گے ، تاجروں کو دھمکیاں دینے سے گریز کیاجائے ہم نے وزیراعظم کے دورہ کوئٹہ کے موقع پر حکومتی یقین دہانی پر دھرنا ختم کیا جائے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوںنے انجمن تاجران بلوچستان کے دیگر رہنماﺅں کے ہمراہ جمعہ کو کوئٹہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا ۔ انہوںنے کہاکہ انہوںنے کہاکہ کوئٹہ تاجروں کی تنظیم انجمن تاجران نے مکمل لاک ڈاﺅن کو مسترد کردیا،حکومت نے پورے ملک میں آٹھ مئی سے سولہ مئی تک لاک ڈان کا اعلان کیا ہے جو انہیں قابل قبول نہیں ہے ۔ انہوںنے کہا کہ تاجروں نے ہفتہ اتوار کو کاروبار بند رکھنے کی مخالفت کی تھی اورتاجروں کا مطالبہ تھا کہ صرف جمعہ کو کاروبا ربند رکھا جائے تاہم حکومت نے کبھی تاجروں کے تحفظات کا خیال نہیں رکھا ۔ انہوںنے کہا کہ وہ بلوچستان عوامی پارٹی کا حصہ ہونے کے باوجود تاجروں کے مفاد پرسمجھوتہ نہیںکریںگے ، 2ہفتے قبل نجی شاپنگ مال میںگھس کر تاجروں پر فائرنگ کی گئی اور تاجروںنے وزیراعظم کے دورہ کوئٹہ کے موقع پر حکومتی یقین دہانی پر دھرنا ختم کیا تھا ۔ انہوںنے کہا کہ حکومتی ترجمان تاجروںکو دھمکیاں دینے سے گریز کریں تاجر تصادم نہیں چاہتے ، ہم گرفتاریوں اور مقدمات سے ڈرنے والے نہیں ہیں ،کاروبار بند کرنے کی بجائے جیل جانے کو ترجیح دیں گے ۔ انہوںنے کہاکہ کوئٹہ میںخریداری کے لئے کم وقت دینے سے بازاروں میں رش کئی گنا بڑھ گیا ہے ، مکمل لاک ڈاﺅن کی بجائے تاجروں کی مشاورت سے ایس او پیز طے کئے جائیں ۔ انہوںنے کہاکہ تاجروں کو لاک ڈاﺅن کے دوران کسی قسم کی سہولت نہیں دی گئی نہ انہیں راشن دیا گیا اور نہ ہی ماسک بلکہ کاروبار بند ہونے کے باعث انہیں نقصان ہورہا ہے او رساتھ ہی یوٹیلیٹی بلز بھی حکومت کی جانب سے بھیجے جارہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ تاجروں کے ساتھ زور زبردستی کی گئی تو صورتحال کی ذمہ داری حکومت پر عائد ہوگی ۔ انہوںنے کہا کہ کوئٹہ کے تاجر ملک کے دیگر شہروں سے ادھار پر سامان لاتے ہیں اور ان کا کاروبار بند ہونے سے نہ صرف انہیں خود نقصان ہوگا بلکہ وہ اپنا ادھار بروقت واپس نہیں کرسکیں گے اس لئے حکومت مکمل لاک ڈاﺅن کے فیصلے پرنظرثانی کرے ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.