Daily Mashriq Quetta Urdu news, Latest Videos Urdu News Pakistan updates, Urdu, blogs, weather Balochistan News, technology news, business news

آذری فورسز کی کارروائی، آرمینین فوج کو بھاری نقصان، 2300 فوجی ہلاک یا زخمی

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

باکو:   آذربائیجان کی فورسز کی کارروائی میں آرمینیا کا بھاری نقصان ہوگیا، چار روز میں آرمینیا کے 2300 سو فوجی ہلاک یا زخمی ہوچکےہیں، جبکہ 130 ٹینک، 200سے زائد میزائل سسٹم اور 25 فضائی دفاعی کو بھی تباہ کیا جاچکا ہے، سلامتی کونسل نے دونوں ممالک کے درمیان طاقت کے استعمال کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق آذر بائیجان اور آرمینیا کے درمیان جنگ کا چوتھا روز جاری ہے، آرمینیا کی فوج کو بھاری نقصان کاسامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

آذری وزارت دفاع کے مطابق لڑائی میں اب تک 2300 آرمینی فوجیوں کو ہلاک اور زخمی کیا جاچکا ہے، آرمینیا کے 130 ٹینک، 200 سے زائد آرٹلری اور میزائل سسٹم، 25 فضائی دفاعی نظام کو بھی تباہ کیا جاچکا ہے۔

باکو کے مطابق آرمینیا کے 6 کمانڈاور آبزرویشن زون، 5اسلحہ کے ڈپو، 50ٹینک شکن توپوں کو بھی ملبے کا ڈھیر بنا دیا گیا ہے۔

سلامتی کونسل نے ہنگامی اجلاس میں لڑائی کی شدید مذمت کی اور دونوں فریقوں کو فوری جنگ بندی کرنے کا کہا ہے۔

کاراباخ کے تنازعہ پرروائتی حریف ترکی اور فرانس کے درمیان لفظی جنگ چھڑ گئی، فرانسیسی صدر نے کہا کہ ترکی کے “جنگی عزائم”آذربائیجان کو کاراباخ کا علاقہ دوبارہ فتح کرنے کے لئے اکسا رہے ہیں۔

ترک صدر اردوان نے جواب دیا کہ فرانس آرمینیا کے ساتھ اظہاریکجہتی کرکے اصل میں کاراباخ کےغیرقانونی قبضہ کی حمایت کررہا ہے۔

 

ترکی کے نائب صدر فواد اوکتائے نے آذربائیجان کے نائب صدر حکمت حاجی ایف اور وزیر اعظم علی اسد اوف کے ساتھ ٹیلی فونک ملاقات کی۔ مذاکرات میں آرمینیا کی طرف سےآذربائیجان پر شروع کئے گئے حملوں کے بارے میں بات چیت کی گئی۔

مذاکرات میں مضبوط آذربائیجان اور مضبوط ترکی کی خواہش پر زور دیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ ترکی آخر تک آذربائیجان کا ساتھ دیتا رہے گا۔

نائب صدر فواد اوکتائے نے کہا ہے کہ علاقے میں 30 سال سے قبضہ جاری ہے اور اب قابض حکومت نے آذربائیجان پر حملوں کا سلسلہ بھی شروع کر دیا ہے۔ اس صورتحال کا جاری رہنا اور خارجی دہشت گردوں کے ساتھ حملے کسی صورت بھی قابل قبول نہیں ہیں۔

ترکی کے وزیر خارجہ میولود چاوش اولو نے آرمینیا کی طرف سے آذربائیجان کی زمین پر شروع کئے گئے حملوں کے بارے میں کہا ہے کہ آذربائیجان آرمینی قبضے کا مسئلہ محاذ پر حل کرنا چاہتا ہے تو ہم اس کا ساتھ دیں گے۔

انہوں نے کہا ہے کہ آذربائیجان کی زمین پر حملے شروع کر کے آرمینیا نے بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کی ہے اور اس کا کوئی بدل ہونا چاہیے۔جہاں تک ترکی کا تعلق ہے تو اگر آذربائیجان مسئلے کو محاذ پر حل کرنے کا خواہش مند ہے تو ترکی اس کا ساتھ دے گا۔

 

چاوش اولو نے کہا ہے کہ آذربائیجان اپنی زمین پر جدو جہد میں مصروف ہے۔ یہ کہاں کا اصول ہے کہ قابض اور اپنی زمین سے محروم دونوں کے ساتھ ایک ہی جیسا سلوک کیا جائے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.