کلبھوشن یادیو کیس پر قانون کے مطابق آگے بڑھیں گے: ترجمان دفتر خارجہ

اسلام آباد: (دنیا نیوز) ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ عالمی عدالت انصاف نے کلبھوشن یادیو کیس کا فیصلہ سنایا جس میں بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کو بری اور رہا کرنے کی بھارتی استدعا منظور نہیں کی۔

ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا ہے کہ پاکستان ایک ذمہ دار ملک کی طرح اپنی عالمی یقین دہانیوں سے شروع سے پیچھے نہیں ہٹا، اسلام آباد کے پاس بہت کم وقت تھا لیکن پاکستان مقدمے میں گیا۔

ترجمان دفتر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان اب اس کیس پر قانون کے مطابق آگے بڑھے گا۔ کمانڈر کلبھوشن یادیو بھارتی نیوی کا حاضر سروس آفسر ہے، کمانڈر کلبھوشن یادیو حسین مبارک پٹیل کی جعلی دستاویز پر پاکستان آیا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ حسین مبارک پٹیل کا پاسپورٹ بھارت نے جاری کیا اور پاسپورٹ اصلی ہے، کلبھوشن یادیو پاکستان میں جاسوسی، ملک کو غیر مستحکم اور متعد دہشتگردانہ کاروائیوں میں ملوث ہے۔

ڈاکٹر محمد فیصل کا مزید کہنا تھا کہ کمانڈر کلبھوشن کی دہشتگردانہ کاروائیوں کے نتیجے میں سینکڑوں معصوم پاکستانی لقمہ اجل بنے، انہوں نے اپنی کرتوتوں کا اعتراف جوڈیشل مجسٹریٹ کے سامنے کیا ہے، یہ بھارتی ریاستی دہشتگردی کی زندہ مثال ہے۔ 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

کلبھوشن کیس میں بھارتی درخواست مسترد ہونے پر مودی سرکار کی عیاریاں

جمعرات جولائی 18 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email نئی دلی: عالمی عدالت برائے انصاف نے کلبھوشن یادیو کیس کے فیصلے میں بھارت کی درخواست مسترد ہونے پر بوکھلاہٹ کی شکار مودی سرکار اپنی عوام کو فیصلے کا غلط رخ دکھا کر خوش کرنے کی ناکام کوششوں میں جُت گئی۔ عالمی […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔