کشمیر میرے خون میں شامل، بھارتی مظالم پر خاموش نہیں رہ سکتے، شاہد آفریدی

مظفر آباد: قومی ٹیم کے سابق کپتان اور آل راؤنڈر شاہد خان آفریدی نے کہا ہے کہ کشمیر میرے خون میں شامل ہے، ہم کشمیریوں کیلئے آواز اٹھاتے رہیں گے۔

تفصیلات کے مطابق شاہد آفریدی، جاوید شیخ، ہمایوں سعید، شہزاد رائے اور دیگر فنکار بھی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے مظفر آباد جلسے میں پہنچے۔ اس موقع پر گلوکار فاخر اور ساحر علی بگا نے اپنے مشہور نغمے گا کر شرکا کا خوب لہو گرمایا۔ اداکارہ حریم فاروق اور مایا علی خان بھی توجہ نگاہ رہیں۔

شاہد آفریدی نے بھارت کو للکارتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں پر ہونے والے مظالم پر خاموش نہیں رہ سکتے۔ کشمیر میرے خون میں ہے۔ جہاں بھی دنیا میں ظلم ہوتا ہے پاکستانی آواز اٹھاتے ہیں۔ ہم کشمیریوں کے لئے آواز اٹھاتے رہیں گے۔

انہوں نے سوال اٹھایا کہ صرف مسلمانوں پر ہی دنیا میں ظلم کیوں ہو رہا ہے؟ جب تک ہم ایک قوم نہیں بنیں گے، دنیا ایسے ہی ظلم کرتی رہے گی۔

اس موقع پر جاوید شیخ، ہمایوں سعید اور شہزاد رائے نے بھی مظلوم کشمیریوں کو یکجہتی کا پیغام دیا۔ جلسے میں لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ ہر طرف قومی اور آزاد کشمیر کے پرچموں کی بہار رہی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

حکومت نے کشمیر کو بیچ دیا ہے، مولانا فضل الرحمان

ہفتہ ستمبر 14 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email ی جی خان: جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ حکومت نے کشمیر کو بیچا ہے اور ایک شخص کو میں کشمیر کاہری سنگھ کہتا ہوں۔ ڈیرہ غازی خان میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے مولانا […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔