کبھی اولڈ فیشن نہیں رہی ، روایات ، ثقافت سے بہت پیار ہے:سویرا ندیم

لاہور (شو بز ڈیسک) اداکارہ سویرا ندیم نے کہا ہے میں نے 15سال کی عمر میں ایک تھیٹر ڈرامہ دیکھ کر اداکاری کو بطور پیشہ اپنانے کا فیصلہ کیا،انہوں نے کہا وہ کبھی بھی اولڈ فیشن نہیں رہیں لیکن اس کے برعکس انہیں اپنی روایات، ثقافت، ماضی اور پرانی چیزوں سے بہت پیار ہے اور ان کی نظر میں ان سب چیزوں کی بڑی اہمیت ہے،اداکارہ نے کہا وہ خود کےلئے وقت ضرور نکالتی ہیں کیونکہ انہیں خود کو وقت دینا پسند ہے، غصے بارے سوال پر انہوں نے کہا جب کوئی دوسرا ان پر یقین نہیں کرتا تو انہیں بہت غصہ آتا ہے، ظاہری خوبصورتی پر یقین نہیں رکھتی بلکہ میری نظر میں سب کچھ خوبصورت ہو سکتا ہے بس دیکھنے والی آنکھ ہونی چاہیے۔

کبھی اولڈ فیشن نہیں رہی ، روایات ، ثقافت سے بہت پیار ہے:سویرا ندیم

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

مسئلہ کشمیر پر عوام کے جذبات کےساتھ کھیلا جارہا ہے اور اگر تقریر سے حل ہونا ہوتا تو بہت پہلے حل ہوجاتا، رانا ثنا اللہ

ہفتہ ستمبر 28 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email لاہور: مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر رانا ثنا اللہ کا کہنا ہے کہ مسئلہ کشمیر پر عوام کے جذبات کے ساتھ کھیلا جارہا ہے اور اگر تقریر سے حل ہونا ہوتا تو بہت پہلے حل ہوجاتا۔لاہور میں عدالت پیشی کے […]
منشیات سمگلنگ کیس میںگرفتار رانا ثنا نے درخواست ضمانت واپس لے لی - Mashriq

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔