نامور پاکستانی شاعر انور مقصود کا طنز

کراچی(شوبز رپورٹر) نامور پاکستانی شاعر، اسکرپٹ رائٹر،میزبان اور مزاح کار انور مقصود نے مولانا فضل الرحمان پر طنز کرتے ہوئے کہا ہے کہ دھرنے میں ایک جگہ بیٹھنا پڑتا ہے اور مولانا صاحب ایک جگہ بیٹھ نہیں سکتے۔کراچی میں سینئر سٹیزن پرائمری ہیلتھ کیئر سینٹر کی افتتاحی تقریب کے دوران انور مقصود نے مولانا فضل الرحمان کے دھرنے کے حوالے سے کہا کہ دھرنے میں ایک جگہ بیٹھنا پڑتا ہے اور مولانا صاحب دھرنے میں ایک جگہ بیٹھ نہیں سکتے۔سینئر سٹیزن کیئر سینٹر کے حوالے سے انور مقصود کا کہنا تھا کہ یقین نہیں آتا سندھ میں کوئی ادارہ اتنی جلدی اتنی ترقی کرسکتا ہے، اس ادارے کی اچھی بات ہے نہ اس کو حکومت سے پانی اور بجلی نہیں چاہئیے۔ کراچی میں اس سینٹر کی بہت ضرورت تھی۔واضح رہے کہ جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی جانب سے 27 اکتوبر کو ازادی مارچ منعقد کرنے کا اعلان کیا گیا ہے جو ملک کے مختلف شہروں اور علاقوں سے ہوتے ہوئے 31 اکتوبرکو وفاقی دارالحکومت اسلام اباد میں داخل ہوگا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

کٹھ پتلی حکومت کا مقابلہ کریں گے،بلاول بھٹوزرداری

منگل اکتوبر 22 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email اسلام آباد: پیپلز پارٹی کے چیرمین بلاول بھٹوزرداری نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان ملک کا سب سے بڑا مسئلہ ہیں جن کے استعفیٰ سے سارے مسائل حل ہوسکتے ہیں۔احتساب عدالت اسلام آباد کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔