بھارت میں ہندو مسلم فسادات کا خدشہ، سیکیورٹی انتہائی سخت

بابری مسجد کیس کے فیصلے کے بعد بھارت میں ہندو مسلم فسادات کے خدشے کے پیش نظر سیکیورٹی انتہائی سخت کردی گئی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ امریندر سنگھ نے سیکیورٹی کی صورتحال کے حوالے سے ایک اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت کی جس میں پنجاب بھر اور خصوصاً ہریانہ میں سیکیورٹی کا جائزہ لیا گیا۔

وزیراعلیٰ پنجاب امریندر سنگھ نے افسران کو ہائی الرٹ رہنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ امن و امان کی بہترین صورتحال کے لیے ہر اقدامات اٹھائے جائیں۔

بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ نے پولیس اور دیگر سیکیورٹی ایجنسیز کو مشتبہ افراد کو گڑبڑ پیدا کرنے والے عناصر پر نظر رکنے کی بھی ہدایت کی ہے۔

حکام کو ہدایت کی گئی ہےکہ امن و امان کی صورتحال خراب کرنے والوں کے خلاف فوری اور سخت کارروائی کی جائے۔

بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ نے جوبھی حکم دیا ہے ہر کسی کو اسے قبول کرنا چاہیے۔

بھارتی حکام نے عوام سے اپیل کی ہےکہ وہ امن برقرار رکھیں اور ایسا کوئی عمل کرنے سے گریز کریں جو امن و امان کی خرابی کا باعث بنے۔

بھارتی حکام کا کہناہے کہ عدالتی فیصلے کے بعد خاص طور پر ہریانہ میں امن و امان کی صورتحال قابو میں رکھنے کے انتظامات کررکھے ہیں جس کے تحت بعض اضلاع میں پہلے ہی ضروری ہدایات جاری کردی گئی ہیں، اس کے علاوہ حساس اضلاع اور علاقوں کے لیے امن کمیٹیاں تشکیل دے دی گئی ہیں۔

دوسری جانب بھارت کے یونین وزیر داخلہ امیت شاہ نے سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ملک بھر میں سیکیورٹی صورتحال کا جائزہ لیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق وزیر داخلہ امیت شاہ نے بعض صوبوں کے چیف سیکریٹریز کو سیکیورٹی کے حوالے سے اہم ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ انتظامیہ کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کے الرٹ رہے اور پولیس کو بھی ہائی الرٹ رکھا جائے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

بلوچستان میں نان بائیوں کی روٹی کی قیمت نہ بڑھانے پرآزادی مارچ میں شامل ہونےکی دھمکی

ہفتہ نومبر 9 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email کوئٹہ: آل بلوچستان تندور ایسوسی ایشن نے روٹی کی قیمت نہ بڑھانے پر جے یو آئی (ف)  کے آزادی مارچ میں شامل ہونےکی دھمکی دے دی۔ آل بلوچستان تندور ایسوسی ایشن نے روٹی كی قیمت 320 گرام پیڑہ 30 روپے كرنے اور مجسٹریٹ […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔