بھارتی فوج کااحتجاج کرنے والی خواتین پر بدترین تشدد،فاروق عبداللہ کی بہن اور بیٹی سمیت درجنوں گرفتار

0

سرینگر(مشرق نیوز) قابض بھارتی فورسز نے مودی کی جارحیت اور کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کےخلاف احتجاج کرنےوالی سابق وزیراعلیٰ فاروق عبداللہ کی بہن اور بیٹی سمیت درجنوں خواتین کو گرفتار کرلیا،تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کیے جانے کےخلاف سرینگر میں متعدد خواتین احتجاجی مظاہرہ کررہی تھیں ،مقبوضہ کشمیر میں جنگی جنون میں مبتلا مودی سرکار کے حکم پر قابض بھارتی فوج نے احتجاج کرنےوالی کشمیری ماﺅں اور بہنوں کو تشدد کا نشانہ بنایا اور گھیسٹے ہوئے پولیس موبائل میں ڈال کر تھانے لے گئے، نہتے خواتین کی آہ بکا سے ظالموں کے کان پر جوں تک نہ رینگی،گرفتار ہونے والوں میںسابق وزیراعلیٰ مقبوضہ کشمیر فاروق عبداللہ کی بہن و بیٹی ،سابق جسٹس بشیر احمد خان کی اہلیہ اورمعروف علمی شخصیات سمیت درجنوں خواتین شامل ہیں،مظاہرین نے بازوﺅں پر سیاہ پٹی باندھی ہوئی تھیں اور ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جس میں بھارت مخالف نعرے درج تھے،ظالم بھارتی فوج نے مظاہرین کو منتشر کرنے کےلئے لاٹھی چارج کیا اور آنسو گیس کی شیلنگ کی جس سے متعدد خواتین کی حالت غیر ہوگئی،ظالم بھارتی فوج نہتی خواتین کے عزم کو توڑ نہ سکی تو اہلکاروں نے فاروق عبداللہ کی بہن ثریا، بیٹی صفیہ اور مقبوضہ کشمیر کے ہائیکورٹ کے سابق چیف جسٹس کی اہلیہ حوا بشیر کو درجنوں خواتین سمیت گرفتار کرکے تھانے منتقل کردیا،گرفتار کی جانےوالی سابق وزیراعلیٰ فاروق عبداللہ کی بہن ثریا عبداللہ نے کہا5اگست سے آرٹیکل 370کی منسوخی کے بعد ہم گھروں میں قید ہیں یہ ایک ایسا زبردستی کا رشتہ ہے جس کا کوئی فائدہ نہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.