بھارتی شہر بنگلور میں 7 سَروں والے سانپ کی جِلد کے چرچے

بنگلور(مانیٹرنگ ڈیسک)آپ نے دو سَروں والے سانپ کے بارے میں تو سنا ہو گا اور شاید کبھی نہ کبھی دیکھا بھی ہو لیکن اگر سات سَروں والا سانپ کبھی آپ کے سامنے آ جائے تو یقیناً آپ خوفزدہ ہو جائیں۔بھارتی شہر بنگلورو کا گاو¿ں مریگودانا گزشتہ روز سے سب کی توجہ کا مرکز بنا ہوا ہے جس کی وجہ وہاں سے ایک سات سَروں والے سانپ کی جلد کا ملنا بتایا جا رہا ہے۔ٹی وی چینلز اور سوشل میڈیا پر متعدد سَروں والے سانپ کی جلد کی ویڈیوز نشر ہونے کے بعد ارد گرد کے دیہات سے بڑی تعداد میں لوگ اس عجیب و غریب سانپ کی جلد دیکھنے مریگودانا پہنچے اور بہت سے لوگوں نے تو ہندو اعتقادات کے مطابق سانپ کی جلد کے ارد گرد پوجا بھی کی۔گاو¿ں کے ایک شہری نے بتایا کہ 6 ماہ پہلے بھی اسی طرح کی ایک جلد یہاں سے ملی تھی اور آج بھی مندر کے بالکل قریب سے سانپ کی جلد برآمد ہوئی ہے جس کا مطلب ہے کہ اس جگہ کو خاص طاقت حاصل ہے۔دوسری جانب سانپ پر تحقیق کرنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسا ممکن ہی نہیں ہے، ابھی تک دنیا میں صرف دو سَروں والے سانپ ریکارڈ پر موجود ہیں اور وہ بھی بہت ہی کم ہیں، جیسے انسانوں میں دو سَروں والے بچے پیدا ہوتے ہیں، دو سَروں والے سانپ کا بھی یہی معاملہ ہے۔سائنس کے مطابق ریپٹائلز میں جلد تبدیل کرنے کے مرحلے کو اکڈیسس کہتے ہیں اور عموماً سانپ اپنی پرانی جلد پر پڑنے والے کیڑے مکوڑوں سے جان چھڑانے کے لیے ایسا کرتے ہیں۔سانپ کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ یہ ہر تین ہفتوں سے دو مہینوں کے درمیان اپنی جلد تبدیل کرتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

د±لہا کی بیت الخلا میں سیلفی پر د±لہن کو51 ہزار رپے انعام ملے گا

جمعرات اکتوبر 10 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email ممبئی (مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی ریاست مدھیا پردیش کی حکومت نے ایک انوکھی اسکیم جاری کی ہے جس میں اگر د±لہا بیت الخلا (باتھ روم) میں سیلفی لے گا اوریہ ثابت کرے گا کہ اس گھر میں باتھ روم موجود ہے تو اس […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔