ایمسٹرڈم میں مسافر طیارے کے اغوا کی اطلاع پائلٹ کی غلطی نکلی

ہالینڈ (مشرق نیوز)ہالینڈ کے شہر ایمسٹرڈم کے شیپول ایئر پورٹ پر غلطی سے ہنگامی حالت میں سکیورٹی اہلکاروں کی بہت بڑی نفری طلب کر لی گئی۔ ایک ہسپانوی طیارے کے پائلٹ نے غلطی سے وہ بٹن دبا دیا تھا، جس کے ذریعے ہائی جیکینگ کی اطلاع دی جاتی ہے۔ایمسٹرڈم سے جعمرات سات نومبر کو ملنے والی مختلف نیوز ایجنسیوں کی رپورٹوں کے مطابق یہ واقعہ ایمسٹرڈم کے اس شیپول ایئر پورٹ پر پیش آیا، جو ہالینڈ کا سب سے بڑا ایئر پورٹ ہے اور یورپ کے بڑے ہوائی اڈوں میں شمار ہوتا ہے۔ اس ایئر پورٹ پر اسپین کی ایک ایئر لائن کے ایک طیارے کے پائلٹ نے ایسی غلطی کی، جس نے ہر کسی کو پریشان کر دیا اور شیپول ایئر پورٹ کے ایک حصے کو فورا? فضائی ٹریفک کے لیے بند بھی کر دیا گیا۔یہ طیارہ اسپین کی Air Europa نامی کمپنی کا ہوائی جہاز تھا، جس کے پائلٹ نے پرواز سے قبل طیارے میں مسافروں کی بورڈنگ کے دوران غلطی سے ایمرجنسی کی اطلاع دینے والا بٹن دبا دیا تھا۔ یہ ایمرجنسی بٹن وہ تھا، جس کے ذریعے کوئی بھی پائلٹ کسی طیارے کے ہائی جیک کر لیے جانے کی اطلاع دیتا ہے۔اس درست سمجھی گئی ہنگامی اطلاع کے بعد چند لمحوں کے اندر اندر ڈچ پولیس کے خصوصی مسلح دستے ایئر پورٹ کے رن وے پر پہنچ گئے اور انہوں نے بلاتاخیر یہ مسافر طیارہ خالی کرا لیا۔ پھر ایک گھنٹے بعد جب ہر قسم کی تسلی کر لی گئی کہ معاملہ کسی حقیقی ہائی جیکنگ کا نہیں تھا، تو اس ہسپانوی طیارے کو شیپول ایئر پورٹ سے پرواز کی اجازت دے دی گئی۔بعد ازاں متعلقہ ایئر لائن نے متاثرہ مسافروں سے اور ٹوئٹر پر ایک پیغام میں بھی اپنے پائلٹ کی اس غلطی پر معذرت بھی کر لی۔ اس ٹویٹ میں کہا گیا، ”کچھ بھی نہیں ہوا۔ تمام مسافر محفوظ ہیں اور ہم اس واقعے پر دل سے معذرت خواہ ہیں۔“ اس واقعے کی وجہ سے شیپول ایئر پورٹ پر معمول کی مسافر پروازوں کا نظام بدھ کو رات گئے تک متاثر رہا۔ جب پائلٹ نے غلطی سے ایمرجنسی بٹن دبایا تھا، تب اس طیارے میں ستائیس مسافر موجود تھے۔ایمسٹرڈم کا شیپول ایئر پورٹ یورپ کے مصروف ترین ہوائی اڈوں میں سے ایک ہے، جسے ہر سال 70 ملین سے زائد مسافر استعمال کرتے ہیں۔دیگر رپورٹوں کے مطابق ڈچ پولیس کے فضائی سفر میں سلامتی کے ماہرین اس بارے میں چھان بین کر رہے ہیں کہ طیارے کے پائلٹ نے غلطی سے ہائی جیکنگ کا الارم بجا کیسے دیا۔ اس لیے کہ ان ماہرین کے مطابق ایسا صرف کسی ایک بٹن کو اچانک دبا دینے سے نہیں کیا جا سکتا بلکہ اس کے لیے پائلٹ کو چار اعداد پر مشتمل ایک کوڈ بھی کنٹرول ٹاور کے عملے کو بتانا ہوتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

پاسپورٹ کے بغیر کرتار پور کسی کو نہیں آنے دینا چاہیئے،چوہدری پرویز الٰہی

جمعہ نومبر 8 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email اسلام آباد(مشرق نیوز) اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی نے کہا ہے کہ مولانا کی یہ بات صحیح ہے کہ پاسپورٹ کے بغیر کرتارپور کسی کو نہیں آنے دینا چاہئے، حکومت زائرین کو باقی سہولیات ضرور دے لیکن پاسپورٹ کی شرط […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔