آرمی ایکٹ میں ترمیم سے قبل نیا وزیراعظم آئے گا، بلاول بھٹو زرداری

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ آرمی چیف کی ایکسٹینشن سے متعلق آئینی ترمیم سے قبل نیا وزیراعظم آئے گا۔

انہوں نے بتایا ہے کہ سابق صدر آصف زرداری کی طبی بنیادوں پر درخواست ضمانت دائر کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

پمز ہسپتال کے باہر میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ حکومتی ڈاکٹرز نے آصف زرداری میں متعدد بیماریوں کی نشاندہی کی تاہم سابق صدر نے ضمانت کی درخواست دینے سے روکا تھا۔

بلاول بھٹو نے بتایا کہ ان کی ہمشیرہ آصفہ بھٹو نے اپنے والد آصف زرداری کو درخواست ضمانت کیلئے آمادہ کر لیا ہے۔ اب ہم عدالت میں طبی بنیادوں پر درخواست ضمانت دائر کریں گے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے اس موقع پر اپنی پارٹی کا موقف دہراتے ہوئے کہا کہ ہم اپنے نظریے سے نہیں ہٹیں گے۔ 27 دسمبر کو لیاقت باغ میں جلسہ کریں گے اور شہید بے نظیر کی برسی منائیں گے۔


ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے بلاول بھٹو نے کہا کہ سپریم کورٹ کے تفصیلی فیصلے کے بعد پیپلز پارٹی کا رول مثبت ہوگا۔ ہم وزیراعظم سے کوئی امید نہیں رکھ سکتے۔ ان کے کردار کی وجہ سے تمام اداروں پر منفی اثر پڑا۔ وہ صرف تحریک انصاف کے لیڈر ہیں اس ملک کے نہیں۔

انہوں نے کہا فارن فنڈنگ کا کیس تحریک انصاف کے خلاف ہے، افسوس اس کا ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں آیا۔ دوسری جانب پیپلز پارٹی کے خلاف جھوٹا کیس بنایا گیا، ہم اپنی جماعت کی فنڈنگ کے حوالے سے کچھ نہیں چھپایا۔

بلاول بھٹو نے ایک اور سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ آل پارٹیز کانفرنس (اے پی سی) کی سب کمیٹی نے الیکشن کمیشن کے ممبران کے تین ناموں پر اتفاق کیا تھا، وہی نام شہباز شریف نے وزیراعظم کو بھیجے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

شہزاد اکبر معاون خصوصی برائے احتساب اور امور داخلہ مقرر

منگل دسمبر 3 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email اسلام آباد: وزیراعظم نے بیرسٹر شہزاد اکبر کو معاون خصوصی برائے احتساب اور امور داخلہ مقرر کر دیا ہے۔ اس حوالے سے کابینہ ڈویژن نے نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا ہے۔ خیال رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ سال اگست […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔