البغدادی کی بیوہ کو گرفتار کر لیا گیا، ترک صدر ایردوآن

ترکی (مشرق نیوز)ترک صدر ایردوآن کے بقول البغدادی کی ہلاکت پر امریکا نے بہت شور مچایا تھا لیکن ترکی نے البغدادی کی بہن، بہنوئی اور اب اس کی بیوہ کو گرفتار کیا ہے مگر ’ہم کوئی واویلا نہیں کر رہے‘۔ترک صدر رجب طیب ایردوآن نے نام نہاد ‘اسلامک اسٹیٹ‘ یا داعش کے مارے جانے والے سربراہ ابوبکر البغدادی کی بیوہ کی گرفتاری کی بدھ کی رات تصدیق کر دی۔ ترک صدر نے یہ تو نہیں بتایا کہ البغدادی کی بیوہ کو کہاں سے گرفتار کیا گیا لیکن ایک سینئر ترک عہدیدار نے جرمنی نیوز ایجنسی ڈی پی اے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ گرفتاری اس وقت عمل میں آئی جب ‘دولت اسلامیہ‘ کے گیارہ مشتبہ اراکین کے خلاف چھاپے مارے گئے۔یہ کارروائی ترک صوبے ہاتائی میں کی گئی تھی، جس کی سرحد شام سے ملتی ہے۔ اس ترک عہدیدار کا اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر کہنا تھا کہ گزشتہ کئی ہفتوں سے چار خواتین، ایک مرد اور چھ بچوں کی مسلسل چوبیس گھنٹے نگرانی کی جا رہی تھی۔ گرفتار ہونے والوں میں ایک خاتون کی اسمائ فوزی کے نام سے شناخت کی گئی ہے، جو ابوبکر البغدادی کی پہلی بیوی ہے۔گرفتار ہونے والوں میں ایک اور خاتون کا نام لیلیٰ جابر ہے اور ڈی این اے ٹیسٹ سے معلوم ہوا ہے کہ وہ البغدادی کی بیٹی ہے۔ ترک حکومت کو البغدادی کے ڈی این اے کا نمونہ عراقی حکومت کی جانب سے فراہم کیا گیا تھا۔ اس سے قبل البغدادی کی بڑی بہن، بہنوئی اور بچوں سمیت ان کے متعدد اہل خانہ کو بھی ترک دستوں نے گرفتار کر لیا تھا۔ گزشتہ ماہ امریکی خصوصی دستوں کی شمال مشرقی شام میں کی گئی ایک عسکری کارروائی کے دوران البغدادی نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا تھا۔ترک حکام کے مطابق گرفتار شدگان کو فی الحال ترکی کے ایک ڈیپورٹیشن سینٹر میں رکھا گیا ہے۔ ترک صدر کا کہنا تھا کہ وہ ان گرفتاریوں پر امریکا کی طرح شور نہیں مچا رہے اور البغدادی کی بیوہ کی شناخت بڑی آسانی اور تیزی سے مکمل کر لی گئی تھی۔ بتایا گیا ہے کہ البغدادی کے اہل خانہ نے ‘رضاکارانہ‘ طور پر داعش کے دیگر سرکردہ ارکان کے بارے میں بھی معلومات فراہم کی ہیں، جن کی بنیاد پر متعدد افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ ترکی نے البغدادی کی ہمشیرہ اور بہنوئی کو گرفتار کر لینے کا دعویٰ منگل پانچ نومبر کو کیا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

ایمسٹرڈم میں مسافر طیارے کے اغوا کی اطلاع پائلٹ کی غلطی نکلی

جمعہ نومبر 8 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email ہالینڈ (مشرق نیوز)ہالینڈ کے شہر ایمسٹرڈم کے شیپول ایئر پورٹ پر غلطی سے ہنگامی حالت میں سکیورٹی اہلکاروں کی بہت بڑی نفری طلب کر لی گئی۔ ایک ہسپانوی طیارے کے پائلٹ نے غلطی سے وہ بٹن دبا دیا تھا، جس کے […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔