افغانستان میں بھارت کے کردار کی حمایت کرتے ہیں، امریکا

امریکا نے کہا ہے کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے فوجیوں کی دست برداری پر غور کے باوجود وہ افغانستان میں بھارت کے کردار کی حمایت کرتے ہیں۔

غیر ملکی خبر ایجنسی ‘اے ایف پی’ کی رپورٹ کے مطابق اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ میں افغان امور کی ذمہ دار نینسی ایزو جیکسن کا کہنا تھا کہ ‘امریکا، افغانستان میں بھارت کی سرمایہ کاری اور تعاون کا خیر مقدم کرتا ہے’۔

ہڈسن انسٹی ٹیوٹ میں افغانستان میں بھارت کے کردار پر منعقدہ کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ‘ہم افغانستان میں پائیدار اور باعزت حل کی کوششوں کی حمایت جاری رکھیں گے جو افغانستان کے مستقبل میں ہماری سرمایہ کاری کو محفوظ کرے’۔

خیال رہے کہ بھارت نے 2001 میں امریکی مداخلت کے بعد افغانستان میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری شروع کی تھی جو 3 ارب ڈالر سے تجاوز کرگئی ہے، اس کے علاوہ بھارت موجودہ افغان حکومت کی مسلسل حمایت کرتا رہا جبکہ طالبان ان کے سخت مخالف تصور کیے جاتے ہیں۔

بھارت نے افغانستان کی پارلیمنٹ کی نئی عمارت بھی تعمیر کی تھی اور بولی ووڈ کے ذریعے افغانستان کے عوام کے ساتھ ثقافتی تعلقات کو بھی آگے بڑھایا اور اس حوالے سے کام کیا گیا۔

دوسری جانب پاکستان نے افغانستان میں بھارت کے کردار پر اعتراض کرتے ہوئے اس کی متنازع سرگرمیوں کی نشان دہی کی تھی اور افغانستان کے راستے پاکستان میں دہشت گردی کے خدشات بھی پائے جاتے ہیں۔

امریکا نے گزشتہ برس افغانستان میں قیام امن کے لیے طالبان سے مذاکرات کا سلسلہ شروع کیا تھا جس کی سربراہی امریکی نمائندے زلمے خلیل زاد کررہے تھے اور رواں برس کے اوائل میں امریکا اور طالبان کے درمیان معاہدہ حتمی شکل اختیار کرنے کے امکانات پیدا ہوگئے تھے، تاہم ایسا نہ ہوسکا۔

طالبان نمائندوں اور امریکا کے درمیان قطر میں طویل مذاکرات ہوئے تھے جس میں کئی امور پر اتفاق ہونے کا تاثر دیا گیا تھا اور طالبان رہنماؤں کی امریکی صدر سے ملاقات بھی طے کی گئی تھی لیکن ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹویٹر میں اچانک اپنے بیان میں طالبان سے ملاقات منسوخ کرنے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد مذاکرات کھٹائی میں پڑ گئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

امریکا، سی پیک میں کرپشن کے الزامات میں احتیاط کرے، چین

ہفتہ نومبر 23 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email چین نے پاک ۔ چین اقتصادی راہداری (سی پیک) منصوبے میں کرپشن کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا، سی پیک پر کرپشن کے الزامات لگاتے ہوئے احتیاط کرے۔ اسلام آباد میں پانچویں سی پیک میڈیا فورم سے […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔