استاد ہدایت اللہ پشتو موسیقی کے نامور گلوکار کا انتقال کرگئے

پشاور:استاد ہدایت اللہ کے خاندان نے ان کے انتقال کی خبر کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ وہ متعدد بیماریوں کے باعث طویل عرصے سے علیل تھے۔انہیں پشاور کے علاقے بیرسکو میں بعداز نماز جنازہ سپرد خاک کردیا گیا۔ان کے پسماندگان میں دو اہلیہ، دو بیٹے اور تین بیٹیاں ہیں۔استاد ہدایت اللہ کے انتقال کو پشتو لوک گلوکاری کا بڑا نقصان مانا جارہا ہے۔مخصوص آواز و انداز اور منفرد شخصیت کے مالک استاد ہدایت اللہ کا بنیادی طور پر تعلق گرچہ ڈاگ بےسود ضلع نوشہرہ سے تھا، جہاں 1940 کو وہ ایک زمیندار گھرانے میں پیدا ہوئے، جبکہ بعدازاں پشاور منتقل ہوگئے۔، ان کے جنازے میں مداحوں کے ساتھ ساتھ ریڈیو، ٹی وی اور اسٹیج فنکاروں نے بھی بڑی تعداد میں شرکت کی ۔استاد ہدایت اللہ نے ‘ڈیر ڑڑیدلے یمہ، ڈیر کڑیدلے یمہ ستا سترگو خوڑلے یمہ’ نامی گیت سے مقبولیت حاصل کی، انہیں پشتو کا محمد رفیع بھی کہا جاتا تھا۔استاد ہدایت اللہ اپنی زندگی میں امریکا، یورپ اور متحدہ عرب امارات کا بھی دورہ کرچکے ہیں جہاں انہوں نے پشتو، اردو، فارسی اور ہندکو زبان میں گلوکاری کی۔وہ پشتو زبان میں 500 سے زائد کامیاب گانے گاچکے ہیں۔استاد ہدایت اللہ نے بہت سی فلموں کیلئے گیت ریکارڈ کرائے جن میں علاقہ غیر، وربل، دیدن۔ جوارگر، دپختو تورہ، غازی اور ایسی ڈھیر ساری پشتو فلمیں شامل ہیں۔اپنی بہترین گلوکاری پر انہیں پرائڈ آف پرفارمنس ایوارڈ سے بھی نوازا جاچکا ہے۔

استاد ہدایت اللہ پشتو موسیقی کے نامور گلوکار کا انتقال کرگئے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

ٹیکسٹائل کے صنعت کاروں نے وزیراعظم دفتر سے حکومت کے منظور کردہ برآمداتی پیکج کے عدم نفاذ کی شکایت کی

پیر ستمبر 30 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email اسلام آباد(مشرق نیوز)مشرق نیوزکے مطابق وزیراعظم دفتر کو ارسال کردہ خط میں آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن (اے پی ٹی ایم اے) نے وفاقی کابینہ سے مطالبہ کیا کہ ’حکومت کے منظور کردہ فیصلے کے نفاذ پر نظرِ ثانی کی […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔