اداکاری کے باوجود شادی کے لیے سسرال کی شرط پرنوکری کرنی پڑی، نعمان اعجاز

کراچی: مایہ نازاداکارنعمان اعجاز کا کہنا ہے کہ اداکاری کے باوجود شادی کے لیے سسرال کی شرط پرنوکری کرنی پڑی۔

اداکارہ ثمینہ پیرزادہ کودیئے گئے انٹرویو میں نعمان اعجازنے کہا کہ انہیں سسرال والوں کومنانے میں بہت مشکلات لگیں، اسے ہمارا المیہ ہی کہا جائے کہ لوگ ایک اداکارسے ہاتھ ملانے اورساتھ کھانا کھانے میں تو بہت فخرکرتے ہیں لیکن انہیں رشتے داری کے لیے بہت مشکل سے قبول کیا جاتا ہے، لوگ سوچتے ہیں کہ لڑکا اداکارہے لیکن کرتا کیا ہے۔

نعمان اعجاز نے کہا کہ لوگ اداکاری کو ایک پیشے کے طورپرنہیں مانتے، شادی کے لئے مجھے نوکری تک تلاش کرنی پڑی کیونکہ سسرال والوں کی شرط تھی کہ جب تک کوئی نوکری یا کام نہیں کروگے شادی نہیں ہوگی۔

نعمان اعجاز نے بتایا کہ نوکری بھی میں اس وقت ڈھونڈ رہا تھا جب دشت کے نام سے سیریل بہت کامیاب ہوا تھا۔ لوگ مجھے پہچانتے تھے اورمیں سوٹ پہن کران سے نوکری مانگ رہا تھا۔ لوگ نوکری کے حوالے سے باتیں چھوڑکرمجھ سے اپنے بچوں کے لیے آٹوگراف مانگتے اورکہتے کہ آپ تو سپراسٹارہیں آپ کو نوکری کی کیا ضرورت ہے؟

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

انتظار ختم: جیمز بانڈ کی 25 ویں فلم ’نو ٹائم ٹو ڈائے‘ کا ٹیزر جاری

پیر دسمبر 2 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email ہولی وڈ کی جاسوسی سے متعلق معروف زمانہ فلم سیریز جیمز بانڈ کی 25 ویں فلم کا مداحوں کو طویل وقت سے انتطار ہے اور اس فلم کی شوٹنگ گزشتہ 2 سال سے جاری ہے، تاہم اب فلم کی ٹیم نے […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔