آٹو انڈسٹری کی فروخت میں کمی، ملازمتوں کو خطرہ

آٹو انڈسٹری (گاڑی ساز صنعت) کی سیلز میں نمایاں کمی ہونے کی وجہ سے اس شعبے میں آئندہ چند ماہ کے دوران 10 سے 15 فیصد تک ملازمتیں ختم ہونے کا خدشہ ہے۔

مذکورہ شعبے میں مشکل وقت کے خطرے سے پہلے دوچار کیا جاچکا ہے جس کی بڑی وجہ ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی، 2.5 فیصد سے 7.5 فیصد تک فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی میں اضافے اور سخت معاشی حالات بتائے جاتے ہیں۔

واضح رہے کہ گذشتہ مالی سال کے دوران گاڑیوں کی فروخت میں 7 فیصد کمی آئی تھی جس کے حوالے سے ماہرین کا ماننا ہے کہ رواں مالی سال مارکیٹ میں مزید 15 سے 20 فیصد کمی ہوگی۔

اس کی بڑی مثال ہونڈا اور ٹویوٹا گاڑی بنانے والی کمپنیاں 13سو سی سی انجن کی حامل گاڑیوں کی فرخت میں کمی کی وجہ سے اپنی پروڈکشن روکنے پر مجبور ہوئیں۔

ان کمپنیوں کا کہنا تھا کہ گاڑیوں کی فروخت میں کمی کی وجہ سے ان کے پاس پہلے سے ہی غیر فروخت شدہ یونٹس موجود ہیں تاہم وہ ان یونٹس کی فروخت تک نئے یونٹس نہیں بناسکتے۔

ہونڈا اٹلس کارز پاکستان (ایچ اے سی پی) کے ایک عہدیدار نے اپنا نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر ڈان کو بتایا کہ فروخت میں حال ہی میں کچھ اضافہ ہوا ہے تاہم وہ دیگر ماہ کی سیلز کے مقابلے میں بہت کم ہے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ سیلز میں کمی کا مطلب گاڑی سازوں کے منافع میں کمی ہے، جس سے براہ راست ٹیکس کی مد میں حکومتی آمدن بھی کم ہوگی۔

انہوں نے مزید کہا کہ آٹو موٹو انڈسٹری کی سست رفتار تب تک ختم نہیں ہوسکتی جب تک حکومت ٹیکسز میں کمی نہ ہوجائے کیونکہ اس کی وجہ سے کمپنیوں کو گاڑی کی قیمتیں کم کرنے میں مدد ملے گی۔

خیال رہے کہ پاکستان میں ہونڈا کا پلانٹ گذشتہ 12 روز سے بندش کا شکار ہے۔

ادھر ٹویوٹا بنانے والی انڈس موٹرز کمپنی (آئی ایم سی) نے اپنا پلانٹ ہفتے میں صرف 5 روز چلانے کا اعلان کیا تھا جبکہ پاک سوزوکی موٹر کمپنی نے اپنا پلانٹ بند نہ کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

ایک آٹو پارٹس سپلائر الماس حیدر کا کہنا تھا کہ پاک سوزوکی کمپنی درآمد شدہ گاڑیوں کے استعمال پر پابندی کی وجہ سے اپنے منافع میں زبردست اضافے کے لیے پر امید ہے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ آٹو انڈسٹری حساس قیمت انڈسٹری ہے، جہاں قیمتوں کا بڑھنا یا کم ہونا گاڑیوں کی فروخت بڑھنے یا کم ہونے پر اثر انداز ہوتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

عالمی سست روی پاکستانی معیشت کو متاثر کر رہی ہے، رپورٹ

جمعہ جولائی 26 , 2019
کراچی: بین الاقوامی سست روی کے اثرات پاکستانی معیشت پربھی مرتب ہو رہے ہیں۔ اے سی سی اے اور آئی ایم اے کی جانب سے بین الاقوامی سطح پر 1162 اکاؤنٹنٹس سے لی گئی رائے شماری سے اس بات کا انکشاف ہوا ہے کہ سال 2018 کے اختتام پر عالمی سطح […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

مشرق اخبار لاہور کوئٹہ پاکستان کے سائیڈ ممتاز احمد شیف ڈائریکٹر. مشرقی اخبار قومی اور بین الاقوامی سطح پر پاکستانی اپ ڈیٹ میں اہم حصہ کام کر رہا ہے. غریب اور ناقدین کے قوانین اور قوانین کی آواز. مشرقی اخبار اس کے روشن مستقبل کی تلاش میں ہے

فوری روابط