آزادی مارچ پر ن لیگی قائدین تقسیم، فیصلے کا اختیار نواز شریف کے سپرد

لاہور (سٹاف رپورٹر) مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ میں شرکت کرنی ہے یا نہیں؟ حتمی فیصلہ نواز شریف کریں گے، بعض لیگی رہنماوں نے مارچ میں شرکت کی مخالفت کر دی تفصیلات کے مطابق مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ کے حوالے سے مسلم لیگ ن کی 4گھنٹے سے زائد مشاورت ہوئی،شہباز شریف کے زیر صدارت اجلاس میں آزادی مارچ کے حوالے سے لیگی رہنما کسی ایک متفقہ فیصلے پر نہ پہنچ سکے ،بعض لیگی رہنماوں نے اس کی سخت مخالفت کی جبکہ کچھ نے شرکت کی حمایت بھی کر دی، مخالف لیگی رہنماوں نے کہا مارچ کی تاریخ کا اعلان اے پی سی کے پلیٹ فارم سے مشاورت کےساتھ نہیں کیا گیا، دھرنا ہوگا یا مارچ؟ خود مولانا فضل الرحمن کی پارٹی کے متضاد بیانات سامنے آ رہے ہیں۔ ایک دن کے مارچ سے حکومت جانے والے نہیں ہے جبکہ آزادی مارچ کے حامی لیگی رہنماوں نے کہا دوسری بڑی جماعت ہیں احتجاج سے باہر نہی رہنا چاہیے، عدم شرکت سے پارٹی بارے چہ میگوئیاں ہوں گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

چین نے صدر شی جن پنگ کے دورہ بھارت سے پہلے پاکستان کو اعتماد میں لیا، شاہ محمودقریشی

بدھ اکتوبر 9 , 2019
Share on Facebook Tweet it Share on Google Email بیجنگ(مشرق نیوز)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے چین نے صدر شی جن پنگ کے دورہ بھارت سے پہلے پاکستان کو اعتماد میں لیا، بیجنگ دورہ بھارت کے بعد بھی اسلام آباد کو پوری طرح باخبر رکھے گا،وزیر خارجہ شاہ […]

چیف ایڈیٹر

سید ممتاز احمد

قارئین اور ناظرین کو لمحہ لمحہ باخبر رکھنے کے لئے” مشرق “ویب سائٹ اور” مشرق“ ٹی وی کااجراءکیاگیا ہے۔روزنامہ” مشرق“ کا قیام1962ءمیں عمل میں آیا تھا ۔یہ اخبار پاکستان کی جدید صحافت کے علمبردار آئین کی بالادستی ،جمہوری قدروں کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کاعلم بلند کرنے کے عزم کے ساتھ دنیائے صحافت میں آیا تھا ۔ ”مشرق “نے جدید تقاضوں کے مطابق اپنے قارئین اور دنیا بھر میں پاکستانیوں کو باخبر رکھنے کے لئے ویب سائٹ اور ویب ٹی وی کا جناب سید ممتاز احمد شاہ چیف ایڈیٹر مشرق گروپ آف نیوزپیپرز کی نگرانی میں اجراءکیاہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ اقلیم صحافت کے درخشندہ ستارے سید ممتاز احمد کا شمار پاکستانی صحافت کے اکابرین میں ہوتا ہے۔زندگی بھر قلم وقرطاس اور پرنٹ میڈیا ہی ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔سید ممتاز احمد شاہ نے آج سے 50 برس قبل صحافت جیسی وادی ¿ پرخار میںقدم رکھا۔ضیائی مارشل لا کے دور میں کئی مراحل آئے جب قلم اور قرطاس سے رشتہ برقرار اور استوار رکھنا انتہائی جانگسل ہوچکا تھا لیکن وہ کٹھن اور دشوار گزار راستوں پر سے گزرتے رہے لیکن ان کے پایہ¿ استقلال میں کبھی لغزش دیکھنے سننے میں نہیں آئی۔ واضح رہے کہ سید ممتاز احمد نے ملک کے اہم ترین انگریزی اخبار ”ڈان“ ”جنگ“ ”دی نیوز“ اور روزنامہ ”مشرق“ میں اپنی گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ اور ان کا مشرق کے ساتھ صحافت کا سفر جاری ہے۔